Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, December 24, 2018

اعظم گڑھ ۔راشٹریہ علماء کونسل کا کارکنان اجلاس۔

حکومت مدہوش،حزب اختلاف خاموش :مولانا طاہر مدنی۔قومی جنرل سکریٹری راشٹریہ علماء کونسل۔

اسمبلی حلقہ نظام آباد سے کارکنان سمیلن کی شروعات کی۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . 
اعظم گڑھ : اتر پردیش۔صدائے وقت۔/ عبدالرحیم صدیقی۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . .  . 
2019 لوک سبھا انتخابات کی آہٹ ہوتے ہی راشٹریہ علماء کونسل نے بھی ضلع بھر میں اپنی سیاسی سرگرمیاں تیز کر دی ہیں۔اسی سلسلے میں ضلع کے سبھی اسمبلی حلقوں میں کارکنان سمیلن کا اعلان کیا تھا جس کا آغاز آج نظام آباد اسمبلی حلقہ سے ہوا۔
    لاہی ڈیہہ بازار میں منعقد اجلاس کو خطاب کرتے ہوئے کونسل کے قومی جنرل سکریٹری مولانا طاہر مدنی نے کہا کہ آج پورا ملک بی جے پی کی ناکام حکومت سے پریشان ہے۔ مہنگائ،کسان قرض، نوٹ بندی، جی ایس ٹی اور دوسرے عوام مخالف نیتیوں سے آج سماج کا ہر طبقہ پریشان و مظلوم ہے۔ ملک و صوبہ ہر جگہ عوام ہائے ہائے کر رہی ہے اور سب سے بڑا المیہ یہ ہے کہ عوام کی پریشانی کو کھلی آنکھوں سے دیکھنے کے باوجود موجودہ حزب اختلاف خاموش تماشائ بنی ہے۔ کیونکہ سب کو سی بی آئ اور ای ڈی کا ڈر ستا رہا ہے۔ کانگریس نے تو تین صوبوں کے عام انتخاب ہونے پر اپنی زبان کھولی اور سڑک پر اترے۔مگر صوبہ اترپردیش میں دونوں حزب اختلاف پارٹیاں خاموش ہیں۔ بھاجپا حکومت کے نشہ میں مدہوش ہے تو سپا اور بسپا سی بی آئ کے ڈر سے خاموش ہیں۔ ان حالات میں عوام متبادل کی تلاش میں ہے اور ایسے میں چھوٹے سیاسی دلوں کا رول اور اہم ہو جاتا ہے۔ اس لئے ضرورت اس بات کی ہے کہ علماء کونسل کے کارکنان و عہدیداران سڑک پر عوام کے حقوق کی لڑائ لڑیں اور عوام کے لئے میدان میں اتر جائیں۔ ٹویٹ کرنے یا ٹی وی اور اخبار پر بیان دینے سے تبدیلی نہیں آتی بلکہ تبدیلی زمین پر سنگھرش کرنے سے آتی ہے اور کونسل کی 10 سال کی تاریخ سنگھرشوں سے بھری پڑی ہے۔ آج جب سب خاموش ہیں تو ہمارا اور آپ کا فرض ہے کہ آپ عام آدمی کی آواز بنیئے اور ظلم کے خلاف مظلوموں اور غریبوں کی آواز بنیئے۔
قومی سکریٹری مفتی غفران قاسمی نے کہا کہ وقت کی ضرورت ہے کہ ہم اپنے اتحاد کو مظبوط کریں اور ایک صف میں کھڑے ہوکر اپنی قیادت علماء کونسل کو مظبوط کریں۔
اس موقع پر پارٹی کے قومی ترجمان طلحہ رشادی نے کہا کہ کونسل کا وجود ہی ظلم کی کوکھ سے ہوا ہے اور ہماری پہچان ہمیشہ سنگھرشوں اور آندولن سے ہوئ ہے اور آج کے اس ماحول میں ہمیں سماج کے ہر طبقے کو جوڑتے ہوئے اپنے سنگھرشوں کو بڑھانے کی ضرورت ہے۔
صوبائ صدر ٹھاکر انل سنگھ نے کہا کہ آج ملک بھر میں ذات مذہب کی سیاست کی جارہی ہے جس سے عوام پریشان ہو چکی ہیں۔ ہندتوا کی ٹھیکیدار بنی بھاجپا کے نیتا آج ہنومان جی کی ذات اور مذہب کو لیکر بیہودہ بیان دیکر ملک بھر کے کروڑوں ہندئوں کی آستھا کو ٹھینس پہونچا رہے ہیں اور جس کام کے لئے ملک کی عوام نے انہیں منتخب کیا ہے اس میں وہ پوری طرح سے ناکام ہیں۔
کونسل کے یوتھ صدر نور الہدی انصاری نے کہا کہ آج ملک بھر میں انارکی پھیلی ہوئ ہے اور ایسے میں ملک کے نوجوانوں کا فرض بنتا ہے کہ وہ ملک میں در پیش بدعنوانی ظلم اور ڈر خوف کے آواز اٹھائیں اور میں موجود نوجوانوں سے درخواست کرونگا کہ وہ آندولن کے لئے آگے آئیں۔
اس اجلاس کی صدارت ضلع صدر حاجی شکیل احمد نے کی۔پروگرام میں اسمبلی صدر نظام آباد محمد عارف،خالدطوی، اشرف اصلاحی،کمال ناصر،شہریار،ماسٹر طارق،عابد ،عادل،اجے, پرویز، عمار کے علاوہ سیکڑوں کارکنان موجود تھے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot