Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Friday, February 15, 2019

اردو زبان کا حسن۔

._______مراسلہ_________

''آج گھر میں کھانا پکا ہے'' -
اس فقرے کے مختلف الفاظ پر زور دینے سے فقرے کے مطلب بدل جاتے ہیں - جیسے :
1 - اگر بولنے میں لفظ ''آج'' پر زور دیں کہ ''آج'' گھر میں کھانا پکا ہے ...
تو اس کا مطلب یہ ہوگا کہ بہت دن سے گھر میں کھانا نہیں بن رہا تھا ، آج بنا ہے -
2 - اگر لفظ ''گھر'' پر زور دیں کہ آج ''گھر'' میں کھانا پکا ہے .. تو اس کا مطلب ہوگا کہ پہلے کہیں اور کھانا بنتا تھا ، آج گھر میں بنا ہے -
3 - اگر لفظ ''کھانا'' پر زور دیں .. کہ آج گھر میں ''کھانا'' پکا ہے .. تو اس کا مطلب ہوگا کہ پہلے گھر میں کچھ اور بنتا تھا آج کھانا بنا ہے -
4 - اگر لفظ ''پکا'' پر زور دیں کہ آج گھر میں کھانا ''پکا'' ہے .. تو مطلب ہوگا کہ پہلے کھانا کچّا رہ جاتا تھا ، آج پکا ہے -
*لیکن ان الفاظ پر زور دینے کے بعد آپ کی خیر نہیں .. اس لیے اردو ادب چھوڑیے چُپ چَاپ کھانا کھائیے --*

مولاناقاری کلیم الدین قاسمی

Post Top Ad

Your Ad Spot