Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Friday, May 24, 2019

اپنی سیاسی بے بصیرتی، بے ثباتی و نا ہلی کا ٹھیکرا ای وی ایم پر پھوڑنا جھوٹی تسلی ہے۔

. . . . . .   صدائے وقت . . . . . . . 
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . .
اپنی  سیاسی بے بصیرتی ،  بے ثباتی اور نااہلی کا ٹھیکڑا اے وی ایم پہ پہوڑنا دل بہلانے اور جھوٹی تسلی کے سوا کچھ نہیں ،  ایم وی ایم مشینوں کو غائب کرنے یا ان میں تبدیلی کی  وائرل ویڈیوز میں اگر اصلیت و صداقت ہوتی تو کیا اب تک اس پہ ادارے  یا اپوزیشن رہنما ایکشن نہ لیتے ؟ یا انتخابی نتائج مسترد  کرکے دوبارہ انتخاب کی آواز نہ اٹھاتے ؟
پورے ہندوستان میں سب ہی  اندھے یا گونگے بہرے تو نہیں ہیں نا  ؟؟؟
شکست وفتح جمہوری انتخابی عمل کا حصہ ہے ، زمینی محنت ، منظم پلاننگ  اور مربوط کوششیں فتح یابی میں مؤثر رول ادا کرتی ہیں ، خوش نما ودل فریب جذباتی نعروں ، دعائوں اور اوراد ووظائف سے سیاسی میدان نہیں مارے جاتے ! “منَ جدَّ وَجَدَ “ ( کوشش کرنے والا بامراد ہوتا ہے ) کے اصول کے تحت اللہ تعالی اپنی مخلوق میں سے کسی کی محنت بھی ضائع نہیں کرتے ۔  
اگر انتخابی عمل میں شفافیت پہ کسی کو شبہ ہو تو  “ ری کائونٹنگ “ کے ادارے اور عدالت عظمی موجود ہیں ، پورے شواہد کے ساتھ متعلقہ فورم سے رجوع کیا جائے ،اور قانونی جنگ لڑی جائے ۔
اجتماعی اور قومی مفادات کو اپنی پارٹی یا شخصی مفادات کی لحد میں دفن کرنے کی مجرمانہ روش جب تک ختم نہیں ہوگی   ہمیں ہر انتخابی عمل میں انہی ٹھوکڑوں ، جراحتوں ، پامالیوں ، خفتوں اور سبکیوں کا سامنا کرنا پڑے گا ۔
2019  کے  پارلیمانی انتخاب میں اپوزیشن پارٹیوں کی بدترین شکست کے بعد اے وی ایم مشینوں کے حوالے سے  ہم جیسے کتنے دیوانے اپنی راگ گائے چلے جائیں ، لیکن  حکمراں جماعت کے جو “نقارۂ جشن “ حشر خیز آواز میں بج رہے ہیں ، کیا ان کی مضبوط و فاتحانہ تھاپ ہماری راگوں سے بھلا بدل جائے گی ؟
. . . . . . . 

Post Top Ad

Your Ad Spot