Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, May 26, 2019

اعظم گڑھ ۔۔مسجد نزیر مدرسہ بیت العلوم سرائے میر میں سابقہ روایات پر اعتکاف کا نظم۔


اعظم گڑھ ۔اتر پردیش۔صدائے وقت۔
بتاریخ 20 رمضان المبارک  ١٤٤٠ھ
مطابق 26مئی 2019ع۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . .
یکشنبہ بعد عصر  قبل ازغروب اعتکاف کا وقت شروع ہورہا ہے
سال گذشتہ کی طرح امسال بھی مدرسہ ھذا کی مسجدنذیر میں زیر سرپرستی مفتی محمد احمداللہ پھولپوری ناظم اعلیٰ مدرسہ ہٰذا،معتکفین حضرات کے لٸے نظم کیا گیا ہے جس میں ملک کے مختلف صوبوں سے کثیرتعداد میں متعلقین ومحبین تشریف لارہے ہیں اعتکاف کے ساتھ ساتھ صحبت اہل اللہ واصلاح نفس اور دین سیکھنے کا بہترین موقع فراہم ہےآج انسان دنیاوی کاروبار اور معاش کے پیچھے انتھک لگ کر خدا اور نظام خدا کو بھول بیٹھا ہے دنیاوی نفع کے لٸے ہر قربانی کو تیار ہےلیکن اگرفرصت نہیں تو صرف عبادت اور آخرت کے لٸے ۔اس مقدس مہینہ میں جہاں مساجد میں نمازیوں کی بھیڑ ہے تو وہیں غیر روزہ دار اور عیش پرست اور دنیا کی چمک دمک میں مشغول بھی اس سےکہیں زیادہ ہیں۔انتہاٸی افسوس کا مقام ہے ۔آج  گھر کےسرپرست کی لاپرواٸی اور گھریلو نظام خراب ہونے کی وجہ سے ہمارا نوجوان روزہ ،نماز،اور تراویح جیسی عبادتوں سے دور اورمحروم ہے آج ان کی دلچسپی صرف موباٸل اور انٹرنیٹ کی سیر کرنے  میں ہے جس پر والدین اور سرپرست ان کی آزادی میں ہی خوش ہیں کیوں کہ موبائل تو انھیں کاعطیہ ہے کل قیامت میں اس کا بھی حساب دینا ہوگا۔
مدرسہ بیت العلوم کا ایک منظر

چونکہ اللہ تعالی کا 
فرمان ہے ۔یاایھاالذین آمنواقواانفسکم واھلیکم نارا۔اے ایمان والو اپنے آپ کو اور اپنے گھر والوں کو دوزخ کی آگ سے بچاٶ۔ اس آیت میں اپنی ذات کے ساتھ اپنے گھر والوں کو بھی دوزخ کی آگ سے بچانے کاحکم ہے آخری عشرہ اعتکاف کا ہے،
اعتکاف عبادت کا بہترین ذریعہ ہے جس میں معتکف اگر مسجد میں خالی بھی بیٹھا رہے پھر بھی عبادت گزاروں میں شمار ہوتا ہےاس کا کوٸی بھی لمحہ ضاٸع نہیں ہوتا.
ایک روایت میں ہے کہ معتکف گناہوں سے محفوظ رہتا ہے اور اسے اتنا ہی بدلہ عطا کیا جاتا ہے جتنا نیکیاں کرنے والے کوملتا ہے
ایک دوسری روایت میں ہے کہ جوشخص اللہ رب العزت کی خوشنودی کی تلاش میں ایک دن کا اعتکاف کرتا ہے تواللہ تعالی اس کے اور جہنم کے درمیان تین ایسی بڑی خندقیں حاٸل فرمادیتے ہیں جودنیا جہاں سے زیادہ چوڑی اور وسیع ہیں

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے اعتکاف کےحکم کے بعد کبھی اس کا ناغہ نہیں فرمایا۔
اسی طرح ایک روایت میں آتاہے کہ جس شخص نے رمضان المبارک کے دس دنوں کا اعتکاف کیا اس کو دوحج اور دوعمرہ کاثواب عطاکیاجاٸے گا۔
اب غور کرنے کی بات ہے کہ اس قدر فضیلت کے باوجودمحرومی سو ٕ قسمت ہے حضرت مولانا مفتی محمد احمداللہ صاحب کے بقول کہ آج کل لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ اعتکاف صرف ضعیفوں کے لٸے خاص ہے یا یہ کہ جس کو فرصت ہو وہ اعتکاف کرے یہ شیطانی دھوکہ ہے بلکہ نوجوانوں کو بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہٸے زندگی کی بٹن کب آف ہوجاٸےاس کا بھروسہ نہیں  ۔
اللہ رب العزت کے نزدیک جوانی کی عبادت کا زیادہ ثواب ہے  اس لٸے نوجوانوں سے درخواست ہے کہ زیادہ سے زیادہ اپنے اوقات کوعبادت میں مشغول رکھیں اور اعتکاف کے لٸے اپنےآپ کو دس دنوں کے لٸے فارغ کریں
اعتکاف سنت کفایہ ہے اپنے محلے کی مسجد میں اعتکاف کریں۔مرد کی بہ نسبت عورتوں کو اپنے گھروں میں اعتکاف کرنا زیادہ آسان ہے عورتیں بھی اس کا اہتمام کرنے کی کوشش کریں۔

Post Top Ad

Your Ad Spot