Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Tuesday, June 25, 2024

اسٹیٹ یونانی میڈیکل کالج و اسپتال میں سائنٹفک رائٹنگ و تحقیقی اخلاقیات پر تین روزہ ورکشاپ کا افتتاح۔

پریاگ راج۔۔اتر پردیش / صدائے وقت/ پریس ریلیز۔
====================================
اسٹیٹ یونانی میڈیکل کالج و اسپتال، پریاگ راج میں نیشنل کونسل فار انڈین سسٹم آف میڈیسن (NCISM) نئی دہلی کے تعاون سے کالج کے آڈیٹوریم میں 24 جون 2024 سےآیوروید، یونانی اور سدها کالجوں کے پوسٹ گریجویٹ گائیڈس کے لئے"سائنٹفک رائٹنگ، تحقیقی دیانتداری اور اشاعتی اخلاقیات " پر ایک تین روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا جارہا ہے، جس کی افتتاحی تقریب آج پرنسپل ڈاکٹر وسیم احمد کے زیر صدارت منعقد کی گئی جس میں ملک کے مختلف طبیہ کالجوں سے ساٹھ پی جی گائڈس کے علاوہ کالج کے اساتذہ و پی جی اسکا لرس نے بھی جوش وخروش کے ساتھ شرکت کی۔
پروگرام کے آرگنائزینگ سکریٹری پروفیسر نجیب حنظلہ عمار نے تقریب کی شروعات جامع و مانع استقبالیہ سے کی۔جناب یثمانیل عثمانی صاحب نے مہمان اعزازی کی حیثیت سے پرجوش انداز میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دادی نانی کے نسخوں کو من و عن بیان کرنا اور ان پر عمل کرنے کا زمانہ نہیں رہا بلکہ وقت کی ضرورت ہے کہ ہر چیز کو تحقیق کے بعد سائنٹفک انداز میں پیش کیا جائے۔
مہمان خصوصی کی حیثیت سے ڈاکٹر کرن ٹولرے نے ریسرچ کے مقاصد کو بیان کرتے ہوئے کہا کہ پی جی اسکا لرس میں ریسرچ کے معیار کو بلند کرنا اور سائنٹفک انداز میں اپنے نتیجے کو اعلی و مستند رسائل و جرائد میں شائع کرنا نیز پی جی کی قدیم تھیسس کو عالمی پیمانے پر منظر عام پر پیش کرنا بھی اس پروگرام کا مقصد ہے۔
پروگرام کے آرگنائزینگ  چیرمین  اورکالج کے پرنسپل ڈاکٹر وسیم احمد نے اپنے صدارتی کلمات میں تمام حاضرین کا خیر مقدم کرتے ہوئے  اس قسم کے عمدہ پروگرام کانظریہ پیش کرنے کیے لئے این سی آئی ایس ایم کو سراہا نیز آپ نے بتایا کہ اس پروگرام کی پلاننگ دو سال پہلے ہی ساٹھ اساتذہ کی ٹرینگ کے ذریعے سے شروع کردی گئی تھی۔  آپ نے اس کے  اہم مقاصد کو بیان کرتے ہوے فرمایا کہ پی جی  گائڈس کی صلاحیتوں کو نکھارنا و اجاگر کرنا اور ریسرچ کو بڑھاوا دینا ہے۔ڈاکٹر محمد خالد پروگرام کے کوآرڈینیٹرکی حیثیت سے پیش پیش رہے،ڈاکٹر  قمر الحسن لاری نے نظامت کے فرائض انجام دئے اور ڈاکٹر آفرین صدیقی نے کلمات تشکر پیش کیا ۔ افتتاحی تقریب کا اختتام قومی ترانے سے ہوا۔
افتتاحی تقریب کے بعد پہلے دن چھ سائنٹفک شیشن ہوئے۔ شیشن کی شروعات سے پہلے نیشنل کونسل فار انڈین سسٹم آف میڈیسن کے مہیا کردہ  پری ٹیسٹ فارم کو ٹرینیز نے آن لائن جمع کیا۔ پہلے شیشن میں  نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف یونانی میڈیسن  غازی آباد سے ڈاکٹر ذہیب عالم خان نے "سائٹفک پبلکیشن کیوں ، کب اور کیسے " نیز دوسرے شیشن میں آپ ہی نے "تحقیقی مقالات کامسودہ  تیار کرنے کاطریقہ" کے عنوانات پر لکچر دئے۔
تیسرے شیشین میں داکٹر کرن ٹولرے نے "طبی تحقیقات کی ڈیزائن اور ا خلاقی مسائل " اور چوتھے شیشین میں "ریسرچ کے طریقہ کار اور اس کے اہم پہلو"کے عناوین پر لکچر پیش کیا۔  آج کے پانچویں شیشین میں ڈاکٹر پوجا سبھر وال نے "ڈیٹا کے اقسام، اس کے پیش کرنے کے طریقے اور نتائج" نیز آپ ہی نے چھٹھویں شیشین میں "اعداد وشمار کی وضاحتی ، تخمینی اعداد و شمار کا تجزیہ اور تشریح " کے موضوعات پر مفصل  روشنی ڈالی۔ ہر شیشین کے اختتام پر ماسٹر ٹرینرس کو اعزازی اسناد اور میمنٹو سے نوازا گیا۔ پروگرام کے اختتام پر ٹرینیز نے فیدبیک فارم کے ذریعے اپنی اپنی رائے کا اظہار کیا۔

ڈاکٹر وسیم احمد