Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Wednesday, December 18, 2019

شہریت ترمیمی ایکٹ کے خلاف ممتا بنرجی نے دوسرے دن بھی کی ریلی

ممتا بنرجی نے کہا کہ مرکزی حکومت ملک کے عوام کو مذہبی بنیادوں پر تقسیم کرکے فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے ماحول کو نقصان پہنچانا چاہتی ہے۔

کولکاتا:/صداٸے وقت/ذراٸع۔
=============================
 شہریت ترمیمی ایکٹ اور این آر سی کے خلاف ممتا بنرجی نے آج دوسرے دن بھی جلوس کی قیادت کی۔ وزیر اعلیٰ نے پرامن ماحول میں احتجاج کرنے کی اپیل کی ہے۔ سوموار کو وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے مرکزی کولکاتا کے ریڈ روڈ سے جلوس کا آغاز کیا تھا اور آج جادو پور کے بس اسٹینڈ سے جلوس کا آغاز ہوا۔ اس موقع پر ممتا بنرجی نے کہا کہ مرکزی حکومت ملک کے عوام کو مذہبی بنیادوں پر تقسیم کرکے فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے ماحول کو نقصان پہنچانا چاہتی ہے۔
ممتا بنرجی نے نئے قانون کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ باہری لوگوں کو شہریت دینے کے لئے یہ سب کیا جارہا ہے مگر سالوں سے ملک میں رہنے 4 لاکھ افراد شہریت کے لئے منتظر ہیں۔ انہیں نظرانداز کردیا گیا ہے۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ این آر سی کی وجہ سے درجنوں افراد نے خودکشی کی ہے۔
ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال میں بھی این آر سی کی وجہ سے خوف و ہراس کا ماحول ہے۔ ممتا بنرجی نے سوال کیا کہ ان اموات کے لئے کون ذمہ دار ہے۔ مرکزی حکومت لوگوں کو ریاست سے نکالنے کی کوشش کر رہی ہے۔
ممتا بنرجی نے شہریت ترمیمی بل قانون کے خلاف ملک بھر میں احتجاج ہو رہا ہے۔ کیرالہ، پنجاب، مدھیہ پردیش، راجستھان اور بہار میں بھی اس کے خلاف احتجاج ہو رہا ہے۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ مذہب کی بنیاد پر شہریت دینے کو ملک کے عوام نے رد کر دیا ہے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot