Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Thursday, July 16, 2020

ممنوعہ ‏جانور ‏کی ‏اسمگلنگ ‏، ‏جراٸم ‏پیشہ ‏افراد ‏سے ‏سانٹھ ‏گانٹھ ‏و ‏ڈیوٹی ‏سے ‏لاپرواہی ‏برتنے ‏کے ‏الزام ‏میں ‏سپاہی ‏شفیق ‏احمد ‏برخاست۔


 جون پور: اتر پردیش /صداٸے وقت /نماٸندہ/ 16 جولاٸی 2020.
==============================
   پولیس سپرنٹنڈنٹ اشوک کمار نے بدھ کے روز دیر رات میں  ایک بڑی کاروائی کرتے ہوئے  مسلسل ڈیوٹی سے  لاپتہ ہونے پر مجرموں سے سانٹھ گانٹھ و ممننعہ جانورں کی اسمگلنگ کے الزام میں کانسٹبل شفیق احمد کو برخاست کردیا۔  اس بڑی کارروائی سے محمکہ پولس میں کھلبلی مچهلی گٸی

 کانسٹبل  شفیق احمد کو  تھانہ  سجان گنج سے 16 مئی 2019 کو ضلع بلیا کے لئے لوک سبھا عام انتخابات میں ڈیوٹی کے لئے بھیجا گیا تھا۔  20 مئی 2020 کو ملزم ضلع بلیا سے پولیس ڈیوٹی کے بعد پولیس لائن جون پور آیا  اور اپنے  پوسٹنگ اسٹیشن سجان گنج جونپور کے لئے روانہ ہوگیا۔  تاہم  یہ تھانہ سوجن گنج نہیں گیا اور بغیر اجازت / چھٹی کے ڈیوٹی پر حاضر نہیں ہوا اور 249 دن پولیس لائن میں غیر حاضر رہا۔  ملزم 2007 ماضی میں بھی غیر حاضر رہا تھا اور مختلف الزامات کے تحت اسے مجموعی طور پر 14 جرمانہ  اور ایک مرتبہ تنخواہ میں کٹوتی  اور 40 چھوٹی چھوٹی  سزا بھی پاچکا ہے۔
 ملزم کے موبائل نمبر کی تفتیش سے پتا چلا کہ اس کی  مشتبہ  لوگوں کے نمبروں سے بات چیت  ہوتی رہی ہے اور خفیہ طریقے سے کی گئی تفتیش تو  غیر قانونی سرگرمیوں  اورو ممنوعہ جانور کی اسمگلنگ میں ملوث پایا گیا۔  جس کے بارے میں ، 14 جون 2020 کو ، شو کاز نوٹس جاری کرتے ہوئے ، 15 دن کے اندر تحریری وضاحت طلب کی گٸی  جس جواب بھی دیا گیا  اور  اس کی وضاحت پیش کی گئی جسکو غیر  مستند پایا گیا ہے۔  پولیس جیسی نظم و ضبط کے محکمہ  میں رہتے ہوئےکانسٹبل کا مذکورہ عمل غیر مہذبانہ اور انتہائی قابل مذمت ہے۔  ملزم کی بار بار عدم موجودگی ، جو انتہائی سنگین بدعنوانی ہے ، اگر ایسے ملزم کو پولیس فورس میں برقرار رکھا گیا تو اس کا اثر دوسرے پولیس اہلکاروں پر پڑے گا۔  مذکورہ تمام الزامات کی تصدیق کے بعد پولیس سپرنٹنڈنٹ شفیق احمد کو پولیس فورس کے کانسٹیبل کے عہدے سے ہٹا دیا گیا۔

Post Top Ad

Your Ad Spot