Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Saturday, August 22, 2020

ممبٸی ‏ہاٸیکورٹ ‏نے ‏29 ‏غیر ‏ملکی ‏تبلیغی ‏جماعت ‏کے ‏لوگوں ‏پر ‏درج ‏ایف ‏آٸی ‏آر ‏کیا ‏خارج۔۔۔کہا ‏” ‏قربانی ‏کا ‏بکرا ‏“ ‏بنایا ‏گیا۔



ممبٸی ۔/ صداٸے وقت /ذراٸع  22 اگست 2020.
==============================
ممبئی ہائی کورٹ کی اورنگ آباد بینچ نے 29 تبلیغی جماعتوں کے خلاف درج ایف آئی آر کو ختم کردیا۔  ان تبلیغی جماعتیوں  کے خلاف دہلی کے نظام الدین مرکز کے ایک پروگرام میں شرکت  کرنے پر ایف آئی آر درج کی گئی تھی۔  آئی پی سی کے تحت  وبائی امراض ایکٹ ، مہاراشٹرا پولیس ایکٹ ، ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ اور فارن سول ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔  اب عدالت نے میڈیا کو سرزنش کرتے ہوئے ایف آئی آر کو منسوخ کرنے کا حکم دے دیا۔  عدالت کا کہنا ہے کہ تبلیغی جماعت کو 'قربانی کا بکرا' بنایا گیا تھا۔  ان لوگوں کو انفیکشن کا ذمہ دار قرار دینے کے لئے میڈیا نے پروپیگنڈا چلایا۔
 اس کیس کی سماعت کرتے ہوئے ہائی کورٹ نے کہا ، "دہلی میں نظام الدین مرکز آنے والے ملکی  اور غیر ملکی تبلیغی لوگوں کے خلاف پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا میں ایک بہت بڑا پروپیگنڈا شروع کیا گیا تھا۔
 ان لوگوں کو ملک میں پھیلنے والے کورونا انفیکشن کے لئے ذمہ دار بنانے کی کوشش کی گئی۔  تبلیغی جماعت کو قربانی کا بکرا بنایا گیا۔
 عدالت نے یہ بھی کہا کہ ملک میں تیزی سے پھیلنے والے انفیکشن کے اعدادوشمار ظاہر کرتے ہیں کہ ان لوگوں کے خلاف کارروائی نہیں کی جانی چاہئے۔  غیر ملکیوں کے خلاف غلط کارروائی کی گئی۔  اس کی تلافی کے لئے مثبت اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔
 دراصل ، تبلیغی جماعت کا پروگرام اس سال مارچ میں نظام الدین ، ​​دہلی کے مرکز میں منعقد کیا گیا تھا۔  لاک ڈاؤن کے دوران امیر جماعت مولانا سعد نے بیرون ملک سے آنے والے جماعت کے افراد  اور ملکی جماعتبار کے افراد  کو مسجد میں رکھا ، جس کے بعد ان پر بھی ملک میں کورونا وائرس کے کیسوں میں اضافہ کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔اس کی تشہیر میں ہندوستانی میڈیا کا بڑا ہاتھ تھا۔
 

Post Top Ad

Your Ad Spot