Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Saturday, January 16, 2021

یو ‏پی ‏پنچایت ‏انتخانات۔۔خواتین ‏کو ‏دی ‏جاٸے ‏گی ‏ترجیح۔۔ریزرویشن ‏کی ‏فہرست ‏آن ‏لاٸن ‏ہوگی ‏جاری۔


 اس بار پنچایت الیکشن (یوپی پنچایت الیکشن 2021) میں ریزرویشن کا فیصلہ لکھنؤ ہی میں ہوگا۔  ریزرویشن لسٹ بھی آن لائن جاری کی جائے گی۔  گھر بیٹھے پنچایت انتخابات کے لئے ریزرویشن کے بارے میں کوئی معلومات حاصل کرسکتا ہے۔
 لکھنٶ ۔۔اتر پردیش /ذراٸع /صداٸے وقت /١٦ جنوری ٢٠٢١۔
==============================
  اتر پردیش میں ، تین سطحی  پنچایت انتخابات (یوپی پنچایت انتخابات 2021) کی تیاریاں تیز ہوگئی ہیں۔  اب لوگ ریزرویشن لسٹ کا انتظار کر رہے ہیں۔  اس وقت بیشتر اضلاع میں انتظامی سطح پر ریزرویشن کا کام جاری ہے۔  معلومات کے مطابق ، فی الحال جس طبقہ  کے لئے نشست مخصوص ہے وہ آئندہ انتخابات میں اس طبقے کے لئے مخصوص نہیں ہوگی۔  ریزرویشن آرڈر میں ، ایس ٹی کی کل مخصوص نشستوں میں سے ایک تہائی ایس ٹی خواتین کے لئے مخصوص ہوگی۔  باقی میں ، مرد اور خواتین دونوں ہی رہیں گے۔  ایس سی کی 21 فیصد مخصوص نشستوں میں سے ایک تہائی نشستیں اس طبقے کی  خواتین کے لئے ہوں گی اور باقی نشستیں اس طبقے کی خواتین یا مرد دونوں کے لئے ہوں گی۔
 اسی طرح او بی سی کی 27 فیصد نشستوں میں ، ٣٣ فیصد  نشستیں اس زمرے کی خواتین کے لئے مخصوص ہوں گی۔  باقی مرد اور عورت دونوں کے لئے  محفوظ ہوں گی ۔  کل نشستوں کا 50 فیصد غیر محفوظ ہوں گے ، لیکن ان میں سے ایک تہائی نشست عام ذات کی خواتین امیدواروں کے لئے مخصوص ہوگی۔  پنچایت انتخابات میں نشستوں کے لئے ریزرویشن کا اطلاق نزولی ترتیب پر ہوگا۔
 ذراٸع نے بتایا کہ گرام پنچایتوں کی سال 2011 کی آبادی کا ڈیٹا فیڈ کیا  جارہا ہے۔  اور اضلاع کے  بلاکس لکھنؤ سے براہ راست جڑ گئے ہیں۔  اس بار پنچایت انتخابات کے لئے ریزرویشن  کا فیصلہ لکھنؤ ہی سے ہوگا۔  ریزرویشن لسٹ بھی آن لائن جاری کی جائے گی۔  گھر بیٹھے پنچایت انتخابات کے لئے ریزرویشن کے بارے میں کوئی معلومات حاصل کرسکتا ہے 
 پنچایتوں میں ریزرویشن نافذ کرنے کے لئے محصول والے دیہات کی آبادی کا اندازہ لگایا جائے گا۔  پانچ سال پہلے ، انتخابات کے وقت گرام پنچایت کی کیا حیثیت تھی ، اس وقت صورتحال کیا ہے ، اس گرام پنچایت نشست کے لئے کس امیدوار کو مختص کیا جائے گا اس کی بنیاد پر فیصلہ کیا جائے گا۔
 ریاست میں تین درجے کی پنچایت انتخابات ہونا ہیں۔  یہاں گرام پردھان ، چھیترا پنچایت ممبر بی ڈی سی ، وارڈ ممبر ، ضلع پنچایت ممبر کے لئے الگ الگ انتخابی عمل ہوگا۔  الیکشن کمیشن نے گاؤں تا گاؤں پوسٹوں کے ساتھ ان کی تعداد میں بھی اضافہ کیا ہے۔  اس میں ایک وارڈ سے ممبر کے لئے 18 امیروار کاغذات پُر کر سکتے ہیں۔  اسی وقت ، بی ڈی سی کے لئے 36 ، گرام پردھان کے 57 اور ضلعی پنچایت ممبروں کے لئے 53 افراد فارم  پُر کیے جا سکیں گے 
، پچھلے انتخابات میں یہ تعداد 45 سے 47 تھی ، لیکن اس بار اس میں اضافہ کیا گیا ہے۔  قبل ازیں امیدواروں کی تعداد زیادہ ہونے کی وجہ سے بہت سارے لوگ الیکشن لڑنے سے محروم ہوگئے تھے۔  اب لوگوں کو الیکشن لڑنے کا موقع خالی نہیں چھوڑا جائے گا۔

Post Top Ad

Your Ad Spot