Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Saturday, September 1, 2018

حادثہ فاجعہ۔

۔ اہالیان بھیرواکے لئے ناقابل تلافی نقصان۔

. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . 
بہ شکریہ مولانا محمد اکرم خاں قاسمی۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . .  
یہ خبرانتہائی دکھ اورافسوس کے ساتھ پڑھی جائے گی کہ مدھوبنی ضلع کے بسفی بلاک کے بھیرواگاؤں کے نوجوان عالم دین مفتی ضیاء الحق قاسمی کامورخہ 30 اگست کو دل کادورہ پڑنے سے انتقال ہوگیاہے۔اناللہ واناالیہ راجعون ۔مفتی ضیاء الحق قاسمی بہارجھارکھنڈکی مشہوردینی درسگاہ مدرسہ حسینیہ رانچی کے سینئراستاذ اورمفتی تھے ۔مفتی صاحب موصوف(جنہیں اب مرحوم لکھتے ہوئے دل ڈوباجارہاہے) بہت ہی باصلاحیت،ذہین اورہرفن مولاانسان تھے۔اللہ نے انہیں گوناگوں خوبیوں سے نوازاتھا۔دارالعلوم دیوبندکے زمانہ طالب علمی میں ہمیشہ امتیازی نمبرات سے کامیاب ہوتے اوراپنی جماعت میں نمایاں رہنے کی وجہ سے اساتذہ کے محبوب نظرتھے۔ایک کامیاب مدرس ہونے کے ساتھ ساتھ بہترین خطیب بھی تھے۔اللہ نے مفتی صاحب مرحوم کی زبان میں بلاکی تاثیررکھی تھی۔گاؤں اورعلاقہ میں کوئی بھی پروگرام ہوتاحضرت مفتی صاحب مرحوم کاخصوصی خطاب ہوتا۔مرحوم علوم دینیہ کے ساتھ علوم عصریہ پربھی کامل دسترس رکھتے تھے اوراردواورنگریزی زبان سے ایم اے کیاتھا۔عربی زبان وادب کے ساتھ ساتھ انگریزی زبان پربھی عبورتھا اوربہت ہی روانی کے ساتھ انگریزی بولاکرتے تھے۔مفتی صاحب مرحوم کئی کتابوں کے مصنف بھی تھے ۔مرحوم کوبھیروا گاؤں میں یہ فخرحاصل تھا کہ وہ گاؤں کے پہلے مفتی تھے اورالحمدللہ نوجوان علماء کے لئے نمونہ تھے۔آج ان کے انتقال سے بھیروا ہی نہیں بلکہ پوراعلاقہ ایک جیدعالم دین،بہترین خطیب اورکامیاب مدرس سے محروم ہوگیا۔اللہ رب العزت کی بارگاہ میں دعاہے کہ اللہ انہیں جنت الفردوس میں اعلی مقام عطافرمائے،ان کے سیئات کوحسنات سے بدل دے،اورانہیں کروٹ کروٹ جنت نصیب فرمائے۔آمین اورپسماندگان کوصبرجمیل عطافرمائے اوراہل وعیال کی غیب سے کفالت کاانتظام فرمائے۔آمین
غفران ساجدقاسمی
چیف ایڈیٹربصیرت آن لائن
30؍اگست 2018 (بعدنمازمغرب)

Post Top Ad

Your Ad Spot