Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Wednesday, September 5, 2018

استاد محترم کو میرا سلام کہنا۔

______________________________
یوم اساتذہ کے موقع پر ایک نایاب نظم۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . .  . 
مرسل--انصاری شعیب اختر مالیگانوی۔
صدائے وقت۔بشکریہ ڈاکٹر خورشید احمد۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . .  . . 
اﮮ ﺩﻭﺳﺘﻮ ﻣﻠﯿﮟ ﺗﻮ ﺑﺲ ﺍﮎ ﭘﯿﺎﻡ ﮐﮩﻨﺎ۔
ﺍﺳﺘﺎﺩِ محترﻡ  ﮐﻮ   ﻣﯿﺮﺍ  ﺳﻼﻡ  ﮐﮩﻨﺎ۔

ﮐﺘﻨﯽ  ﻣﺤﺒﺘﻮﮞ   ﺳﮯ  ﭘﮩﻼ  ﺳﺒﻖ  ﭘﮍﮬﺎﯾﺎ۔
ﻣﯿﮟ ﮐﭽﮫ ﻧﮧﺟﺎﻧﺘﺎ ﺗﮭﺎ ﺳﺐﮐﭽﮫ ﺳﮑﮭﺎﯾﺎ۔

ﺍﻥ ﭘﮍﮪ  ﺗﮭﺎ  ﺍﻭﺭ  ﺟﺎﮨﻞ ، ﻗﺎﺑﻞ  ﻣﺠﮭﮯ  ﺑﻨﺎﯾﺎ۔
ﺩﻧﯿﺎﮰ ﻋﻠﻢ ﻭ ﺩﺍﻧﺶ  ﮐﺎ  ﺭﺳﺘﮧ مجھے ﺩﮐﮭﺎﯾﺎ۔

ﻣﺠﮫ  ﮐﻮ ﺩﻻﯾﺎ  ﮐﺘﻨﺎ ﺍﭼﮭﺎ ﻣﻘﺎﻡ ﮐﮩﻨﺎ۔
ﺍﺳﺘﺎﺩِ  ﻣﺤﺘﺮﻡ  ﮐﻮ  ﻣﯿﺮﺍ  ﺳﻼﻡ  ﮐﮩﻨﺎ۔

ﻣﺠﮫ  ﮐﻮ ﺧﺒﺮ نہ  ﺗﮭﯽ ﺁﯾﺎ ﮨﻮﮞ  ﻣﯿﮟ  ﮐﮩﺎﮞ ﺳﮯ۔
ﻣﺎﮞﺑﺎﭖ ﺍﺱ ﺯﻣﯿﻦ پہ مجھے ﻻﺋﮯ ﺗﮭﮯ ﺁﺳﻤﺎﮞ ﺳﮯ۔

ﭘﮩﻨﭽﺎ  ﺩﯾﺎ  ﻓﻠﮏ  ﺗﮏ  ﺍﺳﺘﺎﺩ  ﻧﮯ ﯾﮩﺎﮞ ﺳﮯ۔
ﻭﺍﻗﻒ ﻧﮧ ﺗﮭﺎ ﺫﺭﺍ ﺑﮭﯽ ﺍﺗﻨﮯ ﺑﮍﮮ ﺟﮩﺎﮞ ﺳﮯ۔

ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﺩﻻﯾﺎ ﮐﺘﻨﺎ ﺍﭼﮭﺎ ﻣﻘﺎﻡ ﮐﮩﻨﺎ۔
ﺍﺳﺘﺎﺩِ ﻣﺤﺘﺮﻡ  ﮐﻮ ﻣﯿﺮﺍ  ﺳﻼﻡ   ﮐﮩﻨﺎ۔

ﺟﯿﻨﮯ ﮐﺎ ﻓﻦ ﺳﮑﮭﺎﯾﺎ، ﻣﺮﻧﮯ ﮐﺎ ﺑﺎﻧﮑﭙﻦ ﺑﮭﯽ۔
ﻋﺰﺕ  ﮐﮯ گر ﺑﺘﺎﺋﮯ، ﺭﺳﻮﺍﺋﯽ ﮐﮯ ﭼﻠﻦ ﺑﮭﯽ۔

ﮐﺎﻧﭩﮯ ﺑﮭﯽ ﺭﺍﮦ ﻣﯿﮟ ﮨﯿﮟ ﭘﮭﻮﻟﻮﮞ ﮐﯽﺍﻧﺠﻤﻦ ﺑﮭﯽ۔
ﺗﻢ   ﻓﺨﺮِ ﻗﻮﻡ   ﺑﻨﻨﺎ  ﺍﻭﺭ   ﻧﺎﺯﺵِ  ﻭﻃﻦ  ﺑﮭﯽ۔

ھے ﯾﺎﺩ ﻣﺠﮫ ﮐﻮ ﺍﻥ ﮐﺎ ﺍﮎ ﺍﮎ ﮐﻼﻡ ﮐﮩﻨﺎ۔
ﺍﺳﺘﺎﺩِ  ﻣﺤﺘﺮﻡ    ﮐﻮ  ﻣﯿﺮﺍ  ﺳﻼﻡ  ﮐﮩﻨﺎ۔

ﺟﻮ  ﻋِﻠﻢ  ﮐﺎ ﻋَﻠﻢ  ھے  ﺍﺳﺘﺎﺩ  ﮐﯽ  ﻋﻄﺎ  ھے۔
ﮨﺎﺗﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺟﻮ ﻗﻠﻢ ھے ﺍﺳﺘﺎﺩ ﮐﯽ ﻋﻄﺎ ھے۔

ﺟﻮ ﻓﮑﺮِ ﺗﺎﺯﮦ ﺩﻡ ھے  ﺍﺳﺘﺎﺩ ﮐﯽ  ﻋﻄﺎ ھے۔
ﺟﻮ ﮐﭽﮫ ﮐﯿﺎ ﺭﻗﻢ ھے ﺍﺳﺘﺎﺩ ﮐﯽ ﻋﻄﺎ ھے۔

ﺍﻥ ﮐﯽ ﻋﻄﺎ ﺳﮯ ﭼﻤﮑﺎ ھے ﻧﺎﻡ ﮐﮩﻨﺎ۔
ﺍﺳﺘﺎﺩِ محترﻡ ﮐﻮ ﻣﯿﺮﺍ ﺳﻼﻡ ﮐﮩﻨﺎ۔

ﺍﮮ ﺩﻭﺳﺘﻮ ﻣﻠﯿﮟﺗﻮ ﺑﺲ ﺍﮎ ﭘﯿﺎﻡ ﮐﮩﻨﺎ۔
ﺍﺳﺘﺎﺩِ  محترﻡ  ﮐﻮ  ﻣﯿﺮﺍ  ﺳﻼﻡ کہنا۔

Post Top Ad

Your Ad Spot