Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, February 10, 2019

یہ آگ سب،،،،تمہاری لگائی ہوئی ہے۔

از/۔محمد نصر الله  ندوی ندوة العلماء/۔صدائے وقت
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . 
ان دنوں کانگریس صدر راھل گاندھی کا بیان سرخیوں میں ھے جس میں انہوں نے اقتدار میں آنے کے بعد تین طلاق کا سیاہ قانون ختم کرنے کی بات کہی ھے گویا یہ کانگریس کی طرف سے مسلمانوں پر احسان عظیم ھوگا اور مسلمانوں کے سارے مسائل یکلخت حل ھو جائیں گے اس میں شک نہیں کہ یہ بیان مسلمانوں کی مظلومیت اور بے بسی کا منھ بولتا ثبوت ھے ھمار ے آباء واجداد جب اس ملک کو انگریزوں کی غلامی  سے آزاد کرنے کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کر رھے تھے اور اپنے لہو سے آزادی کی تاریخ رقم کر رھے تھے اس وقت انہوں نے خواب میں بھی نہیں سو چا تھا کہ ایک دن مسلمانوں کو یہ بھی دیکھنا پڑے گا  ان کی شریعت پر براہ راست حملہ کیا جائے گا اور ان کو قید وبند کی زنجیروں میں جکڑنے کیلئے طلاق پر قانون بنایا جائے گا پھر مسلمان کاسہ گدائی لئے چوراھے پہ کھڑا ھوگا اور اپنی جان بچانے کیلئے سیاسی پارٹیوں سے فریاد کرے گا یقینا یہ صورتحال حد درجہ افسوسناک ھے لیکن یہاں سوال یہ ھے کہ اس صورتحال کیلئے ذمہ دار کون ھے؟کس نے بی جے پی کو اتنا طاقتور بنایا کہ آج وہ اس قدر بے لگام ھو گئی ھے کس نے دوسیٹ والی پارٹی کو اس لائق بنایا کہ وہ آج بھاری اکثریت کے ساتھ تخت وتاج پر متمکن ھے ؟پوری دنیا جانتی ھے کہ بی جے پی کے پیچھے اصل طاقت آر ایس ایس کی ھے یہ وھی آر ایس ایس ھے جس نے گاندھی کا قتل کیا جو بھارت کے دستور میں یقین نہیں رکھتی وہ اس ملک میں منو اسمرتی کو نافذ کرنا چاھتی ھے جو اپنے ہیڈ کواٹر پر ترنگا نہیں لہراتی ھے جس کے غنڈے کھلے عام گوڈسے کا مندر بنانے کا مطالبہ کرتے ھیں جس کے دھشت گرد گاندھی کی تصویر پر گولی چلاتے ھیں یہ وھی آر ایس ایس ھے جس پر سردار پٹیل نے پابندی لگا دی تھی ۔۔۔۔مگر کانگریس نے اس پابندی کو ختم کردیا اور اس طرح ملک دشمن اس تنظیم کو نئی زندگی مل گئی پابندی کے باوجود اسکی تخریبی سرگرمیاں جاری رھیں مگر کانگریس نے کوئی دھیان نہیں دیا حد تو تب ھو گئی جب 2006 سے 2008 کے درمیان آرایس ایس نے ملک کے طول وعرض میں دھماکے کرائے سمجھوتہ ایکسپریس میں بھی دھماکہ کیا گیا ان دھماکوں میں آر ایس ایس کا نام سامنے آیا سمجھوتہ ایکسپریس کا کلیدی ملزم اسیما نند نے کھل کر کہا کہ یہ دھماکے موہن بھاگوت کے اشارے پر ھوئے اور اندریش کمار باضابطہ سازش اور منصوبہ بندی میں شامل ھے مگر کانگریس نے موھن بھاگوت اور اندریش کمار کو گرفتار کرنے کے بجائے مسلم نوجوانوں کی لا متناہی گرفتاری کا سلسلہ شروع کردیا سینکڑوں نوجوان گرفتار ھوئے ان کے گھر برباد ھوئے ان کے خاندان پر بدنامی کا کلنک ھمیشہ کیلئے لگ گیا مسلمانوں کی اس تباھی کیلئے سب زیادہ ذمہ دار کانگریس اور اس وقت کا وزیر داخلہ شیوراج پا ٹل ھے 2009 میں جب دوبارہ کانگریس کی حکومت بنی تو لالو پرساد نے وزارت داخلہ کا قلمدان مانگا اور چیلنج کیا کہ ھم آرایس ایس کا وجود مٹادیں گے مگر کانگریس نے انکار کردیا اس لئے کہ کسی بھی قیمت پروہ اس سانپ کو زندہ رکھنا چاھتی تھی تاکہ اس کا ڈر دکھا کر مسلمانوں کا ووٹ حاصل کیا جائے آخر کار 2014 میں یہ سانپ اژدھا بن کر ہندوستان کے تخت وتاج پر براجمان ھوا اور دھیرے دھیرے توانا ھوتا رھا پہلے اس نے کانکریس مکت بھارت کی بات کی پھر مسلمانوں پر حملہ شروع کیا اور اب سر عام وہ جمہوریت کو قتل کرکے آئین ودستور کی دھجیاں اڑا رہا ھے اور کھلے عام ملک کو تقسیم کرنے والی باتیں کررھا ھے جب تک کانگریس کی آنکھ کھلتی بہت دیر ھو چکی تھی کانگریس کو جب اپنے وجود کا خطرہ محسوس ھوا تب اس نے ہنگامہ شروع کیا اور اپنی بقا کی خاطر مندر مندر گھونے لگی اس سے بھی بات نہیں بنی تو ریجنل پارٹیوں سے تال میل بٹھانے لگی اور پھر بھی اطمینان نہیں ھوا تو حسب سابق مسلمانوں کو بیوقوف بنانے کیلئے تین طلاق کا مسئلہ چھیڑ دیا ۔۔۔۔۔سوال یہ ھے کہ کانگریس پہلے یہ بتائے کہ ساٹھ سالوں میں اس نے مسلمانوں کیلئے کیا کیا؟کچھ مولوی یہ کہتے ھیں کہ کانگریس نے دستور کی حفاظت کی۔۔۔۔میرا سوال یہ ھے کہ دستور کی کس دفعہ میں لکھا ھے کہ بے قصور مسلمانوں کو اندھادھند گرفتار کرو؟کہاں لکھا ھے کہ ان کی نسل کشی کیلئے کالا قانون بناؤ؟فسادات کے نام پر ان کی جان مال اور آبرو کو نیلام کرو؟سرکاری محکموں میں ان کے ساتھ دشمنی کا برتاؤ کرو؟ان کیلئے اعلی تعلیم اور ترقی کے راستے بند کردو؟یہ سارے مظالم کانگریس مسلمانوں کے ساتھ کر چکی ھے ۔۔۔اور ستم بالائے ستم یہ کہ انسانیت کے قاتل مودی کو کیفر کردار تک نہیں پہونچایا بلکہ اسے کھلے عام ملک کو تباہ کرنے کیلئے چھوڑدیا۔۔۔آج ایک ہٹ دھرم خودسر تانا شاہ ملک کا دشمن وزیر اعظم اقتدار کی مسند پر بیٹھا ھے جو صرف آئین مخالف کام کرتا ھے اور اقلیتوں کو ذھنی اذیت میں مبتلا کرنا چاھتا ھے تو اس کیلئے کانگریس بھی بی جے پی کے شانہ بشانہ مکمل ذمہ دار ھے!!

Post Top Ad

Your Ad Spot