Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Wednesday, July 3, 2019

سابق ایم ایل اے کرشنا نند راٸے قتل کیس میں مختار انصاری سمیت سبھی ملزمین سی بی أٸی عدالت سے بری۔

: نٸی دہلی۔۔۔۔صداٸے وقت۔۔ذراٸع۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اتر پردیش کے محمد أباد (غاذی پور) اسمبلی حلقہ سے بی جے پی سے ایم ایل اے کرشنا نند راٸے قتل معاملہ میں  مٸو سے ایم ایل اے مختار انصای، ان کے بھاٸی ایم پی غازیپور افضال انصاری سمیت سبھی ملزمین کو أج سی بی أٸی عدالت پٹیالہ ہاوس کورٹ نٸی دہلی نے ثبوتوں اور شہادت و دلاٸل کی کمی کے باعث بری کردیا۔اس کیس میں
کل 8 افراد کے اوپر مقدمہ قاٸم ہوا تھا جس میں مہیشوری،اعجاز الحق، مختار انصاری، افضال انصاری ،راکیش پانڈے،رامو ملاح،منصور انصاری اور منا بجرنگی کے نام شامل تھے۔
ایم ایل اے مختار انصاری

غور طلب ہے کہ 2005 میں ایم ایل اے کرشنانند راٸے کا قتل ہوا تھا اس قتل کی واردات سے مشرقی یو پی میں سیاسی زلزلہ أگیا تھا ۔موجودہ مرکزی حکومت میں وزیردفاع راجناتھ سنگھ نے اس واردات کے خلاف وارانسی میں دھرنا دیا تھا انصاف ریلی نکالی تھی۔۔کرشنا نند راٸے کی بیوہ نے سی بی أٸی انکواٸری کی مانگ کی تھی اور الہ أباد ہاٸی کورٹ کے حکم پر سی بی أٸی تفتیش شروع ہوٸی۔اس میں سی بی أٸی نے ایم ایل اے مختار انصاری کو خاص سازش کرتا بتایا تھا۔
ایم پی افضال انصاری

13 سال بعد اس مقدمے کا فیصلہ أیا جس میں سبھی مزمان بری ہوگٸے۔۔ملزمان میں منا بجرنگی کی موت ہوچکی ہے۔جبکہ بقیہ سات ملزموں کے خلاف سی بی أٸی کوٸی ثبوت پیش نہیں کر سکی۔

Post Top Ad

Your Ad Spot