Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, December 29, 2019

سی اے اے – این آر سی کی غلط فہمی دور کرنے پہنچے بی جے پی لیڈر کی لوگوں نے کر دی پٹائی!

اتر پردیش بی جے پی ضلع اقلیتی سیل کے جنرل سکریٹری مرتضیٰ کاظمی جب این آر سی اور شہریت قانون کے بارے میں سمجھانے کے لیے امروہہ کے لکڑا محلہ پہنچے تو ناراض بھیڑ نے انھیں گھیر لیا اور پٹائی شروع کر دی۔
امروہہ ۔۔اتر پردیش /صداٸے وقت /ذراٸع۔
============================= 
امروہہ ضلع میں شہریت قانون اور این آر سی کے فائدے بتانے کے دوران بی جے پی کے ایک لیڈر کی مقامی لوگوں نے زبردست پٹائی کر دی۔ مشکل حالات کو دیکھتے ہوئے بالآخر بی جے پی لیڈر کو وہاں سے راہ فرار اختیار کرنا پڑا۔ موصولہ رپورٹ کے مطابق پارٹی کے ضلع اقلیتی سیل کے جنرل سکریٹری مرتضیٰ آغا کاظمی کو جمعہ کے روز امروہہ واقع لکڑا محلہ میں اس وقت گھیر کر پٹائی شروع کر دی گئی جب وہ لوگوں کو شہریت قانون اور این آر سی کے بارے میں بتا رہے تھے۔
بی جے پی کی اقلیتی سیل لوگوں کو سی اے اے اور این آر سی کے بارے میں سمجھانے کے لیے اور یہ بتانے کے لیے کہ سی اے اے اور این آر سی ہندوستانی مسلمانوں کا یہاں رہنے کا حق نہیں چھین رہا ہے، اور انھیں اس کی مخالفت نہیں کرنی چاہیے، ایک پروگرام منعقد کرنے کی کوشش کر رہی تھی۔ لیکن بی جے پی اقلیتی سیل کی کوشش بری طرح ناکام ثابت ہو گئی۔ کچھ میڈیا ذرائع میں اس طرح کی خبریں آئی ہیں کہ کاظمی کو لوگوں نے دوڑا دوڑا کر پیٹا۔
اس سلسلے میں کاظمی نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ “میں جمعہ کو امروہہ کے لکڑا محلہ میں ایک دکان پر گیا اور مسلمانوں کے درمیان سی اے اے اور این آر سی کو لے کر بیداری پھیلانے کی کوشش کر رہا تھا۔ اسی درمیان ایک راجہ علی نامی شخص نے اچانک میرے اوپر حملہ کر دیا۔ اس نے میرا گلا دبانے کی کوشش کی۔ میں وہاں سے جیسے تیسے بھاگا۔ اس کے خلاف میں نے ایف آئی آر درج کرا دیا ہے۔”

امروہہ کے پولس سپرنٹنڈنٹ وپن تاڑا کا اس تعلق سے کہنا ہے کہ معاملہ درج کر لیا گیا ہے اور ملزم کو گرفتار بھی کر لیا گیا ہے۔ اس سے پورے واقعہ کی پوچھ تاچھ کی جا رہی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ ہفتہ شہریت قانون اور این آر سی کے خلاف ہوئے مظاہروں کو دیکھتے ہوئے امروہہ میں پولس کو الرٹ پر رکھا گیا ہے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot