Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Thursday, December 19, 2019

اے ایم یو اور جامعہ اسلامیہ میں طلبہ پر پولس تشدد اور شہریت ترمیمی قانون کے خلاف سابق طلبہ علیگڑھ ایسوسی ایشن نے صدر جمہوریہ کو منسوب ایس ڈی ایم کو میمورینڈم دیا۔

جونپو۔۔اتر پردیش۔۔صداٸے وقت/مورخہ ١٩ دسمبر ٢٠١٩۔
============================
جامعہ ملیہ اسلامیہ دہلی و اے ایم یو علیگڑھ میں طلبہ پر ہوٸے پولیس تشدد کے خلاف اور شہریت ترمیم قانون ٢٠١٩ کی مخالفت میں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اولڈ بواٸز ایسوسی سی ایشن شاہگنج نے ایس ڈی ایم شاہ گنج کو صدر جمہوریہ کو منسوب ایک میموررینڈم پیش کیا ۔۔۔اس میں صدر جمہوریہ سے مطالبہ کا گیا ہے کہ گزشتہ 15 دسمبر کو جامعہ ملیہ اسلامیہ دہلی اور علیگڑھ مسلم یونیورسٹی کے طلبہ جو کہ شہریت ترمیمی بل 2019 کا پرامن احتجاج کر رہے تھے ان پر پولیس کے ذریعہ کی گٸی پر تشدد کارواٸی ۔لاٸبریری۔ہاسٹل یہاں تک کی مسجد میں جبراً داخل ہوکر آنسو گیس کے گولے داغنا ۔لاٹھیوں سے پیٹنا ۔طالبات کو بھی پیٹنا جیسی حرکت سے طلبہ کے علاوہ پورے ملک کے عوام میں غم و غصہ ہے۔۔آنجناب بھی خود ان مرکزی یونیورسٹی کے وزیٹر /چانسلر ہیں ۔ان دونوں تعلیم گاہوں میں پولس کا بغیر اجازت داخل ہونا قطعی مناسب نہیں ہے۔اس لٸیے علی گڑھ کے سابق طلبہ کی یہ تنظیم کا مطالبہ ہے کہ اس معاملے کی اعلیٰ سطحی جوڈیشیل انکواٸری کرانے کی ہدایت جاری کریں تاکہ مستقبل میں کسی بھی تعلیمی ادارے میں پولیس ایسی حرکت نہ کرے جس سے طلبہ کا جسمانی و جذباتی استحصال ہو۔

ساتھ ہی آنجناب سے یہ بھی گزارش ہے کہ شہریت ترمیمی ایکٹ 2019 جس میں پڑوسی تین ملکوں کی اقلیتوں کو م
 مذہبی شناخت کی بنیاد پر جمہوریہ ہندوستان کو شہریت دینے کی بات کہی گٸی ہے یہ ملک کی سیکولرزم کی روح کے منافی ہے اور آٸین مخالف ہے ۔یہ ترمیمی قانون آٸین کے اس حصے میں دخل اندازی ہے جس کا حق پارلیمنٹ کو حاصل ہی نہں ہے۔۔یہ ترمیمی قانون پوری طرح سے غیر آٸینی ہے ۔اس لٸیے ہمارا یہ مطالبہ ہے کہ اس غلطی کو سدھارنے کے لٸیے پارلیمنٹ کو نظر ثانی یا ترمیم کرنے کی ہدایت دی جاٸے جس سے موجودہ حکومت کی اس تاریخی بھول کو درست کیا جاسکے اور ملک کے سیکولر آٸین کو بچایا جا سکے۔

ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر شرف الدین اعظمی ، جنرل سکریٹری ڈاکٹر تبریز عالم و خازن ایڈوکیٹ سرور عالم نے ایس ڈی ایم شاہگنج   راجیش کمار برما کو میورینڈم دیکر گزارش کی کہ اس کو صدر جمہوریہ کو بھیج دیا جاٸے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot