Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Tuesday, January 28, 2020

پوروانچل یونیورسٹی میں انسپاٸر ساٸنس کیمپ کا انعقاد۔

جون پور۔۔۔اتر پردیش۔ (صداٸے وقت ۔۔نماٸندہ) 
==============================
ویر بہادر سنگھ پوروانچل یونیورسٹی کے سیمینار ہال میں انسپائر سائنس کیمپ 2020 کے پہلے دن پیرکے روزدوسرے سیشن میں ٹرپل آئی ٹی الہ آباد کے پروفیسر کرشنا مشرا نے سائنس اور معاشرے کے مابین تعلقات کو آسان زبان میں سمجھایا۔ انہوں نے طلبا کو سائنس میں نئی ٹیکنالوجی جیسے نینو ٹیکنالوجی، بائیوٹیکنالوجی، الیکٹرانکس اور ذاتی میڈیشین سے آگاہ کیا۔
آئی آئی ٹی دہلی کے پروفیسر نیرج کھرے نے طلباء میں توانائی ڈالتے ہوئے سائنسی شعور کو پْر کرنے کے لئے عظیم سائنس دانوں کی مثالوں اور تجربات پر روشنی ڈالی۔انھوں نے قدرت کے مختلف اصولوں سے متاثر ہوکر اپنے اصولوں کا استعمال کرتے ہوئے، مختلف سائنسی تجربات کی وضاحت کی۔ ساتھ ہی سپر کنڈکٹیوٹی کا استعمال کرتے ہوئے تیز رفتار مقناطیسی ٹرین تیار کرنے کے کردار پر بھی روشنی ڈالی۔پروفیسر پی پی ماتھور یونیورسٹی آف پنڈی چیری نے ڈی این اے اور اس کے مواصلات کے طریقہ کار اور عمل کے ذریعہ طلباء کو بیدار کیا۔ انھوں نے کہا کہ ڈی این اے میں بے حد ڈیٹا کو ذخیرہ جمع کرنے کی صلاحیت ہے۔ انسانی جسم میں اپنے جینوں کے علاوہ مختلف جراثموں کے جین بھی پائے جاتے ہیں، جو مختلف حیاتیاتی افعال کو متاثر کرسکتے ہیں۔ پروفیسر ماتھر نے کلوننگ کی تکنیک پر بھی تبادلہ خیال کیا اور اس کے استعمال سے نئے اعضاء تیار کرنے کے کردار پر روشنی ڈالی۔

Post Top Ad

Your Ad Spot