Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, February 3, 2020

بولی سے نہیں مانیں گے تو گولی سے مناٸیں گے۔۔۔۔۔۔۔۔۔یوگی آدتیہ ناتھ۔سی ایم یوپی۔

دہلی انتخابات میں یوگی آدتیہ ناتھ کی اشتعال انگیزی،الیکشن کمیشن خاموش تماشائی.
نئی دہلی۔ /صداٸے وقت /ذراٸع /۳؍فروری ٢٠٢٠۔
==============================
یوگی آدتیہ ناتھ دہلی میں انتخابی مہم پر ہیں۔یوپی کے وزیر اعلی کی شبیہ فائر برانڈ ہندووادی رہنما رہی ہے۔ہندوتو کی شبیہ بتانے کے لئے بی جے پی نے یوگی کو انتخابی مہم میں اتارا ہے۔انتخابی پلیٹ فارم ملتے ہی یوگی نے شاہین باغ کے بہانے ماحول بنانا شروع کر دیا ہے۔’بولی سے نہیں مانیں گے تو گولی سے منائیں گے ‘والے ان کے بیان پر تنازعہ بڑھ گیا ہے۔عام آدمی پارٹی نے الیکشن کمیشن سے یوگی کی شکایت کر دی ہے۔کہا جا رہا ہے کہ ان کے انتخابی مہم پر روک لگا دی جائے
۔یوگی کہہ رہے ہیں کہ شاہین باغ والوں کو کیجریوال بریانی کھلانے رہے ہیں۔یوگی آدتیہ ناتھ دہلی انتخابات کے لئے بی جے پی کے اسٹار پرچارک ہیں۔1 فروری سے ہی وہ یہاں ریلیاں کر رہے ہیں۔یوگی کو ان علاقوں میں لگایا گیا ہے، جہاں پروانچلی لوگ رہتے ہیں۔ دہلی میں بہار اور یوپی کے لوگوں کو پروانچلی یا پوربیا کہا جاتا ہے۔ایک اندازے کے مطابق دہلی میں ایسے 45 لاکھ ووٹر ہیں۔ کہا جاتا ہے 27 سیٹوں پر جیت اور ہار پوربیا ووٹر طے کرتے ہیں۔اس کے علاوہ 8 سے 12 اسمبلی سیٹوں کو وہ متاثر کرتے ہیں۔ملک میں کہیں بھی کسی طرح کا انتخابات ہو۔یوپی کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کو بی جے پی اسٹارپرچارکوںکوبناتی رہی ہے۔گجرات انتخابات میں مودی کے بعد سب سے زیادہ ریلیاں یوگی نے کی۔وہاں بھی وہ کامیاب رہے۔زیادہ تر سیٹوں پر بی جے پی جیتی، جہاں یوگی نے پرچار کیا۔کرناٹک انتخابات میں بھی یوگی آدتیہ ناتھ کا ملا جلا اثر رہا۔لیکن چھتیس گڑھ میں وہ چل نہیں پائے۔ویسے بی جے پی کی وہاں کانگریس کے ہاتھوں شرمناک شکست ہوئی تھی۔مہاراشٹر اور ہریانہ کے انتخابات میں بھی یوگی نے دھواں دھار پرچار کیا تھا ۔جھارکھنڈ انتخابات میں انہوں نے درجن بھر ریلیاں کیں۔لیکن سب سے زیادہ بحث جامتاڑا کی رہی۔اپنے بیانات کو لے کر یوگی آدتیہ ناتھ ہمیشہ بحث میں رہتے ہیں۔انتخابات ہو یا نہ ہو۔وہ  کھلے عام ہندوتو کا کارڈ کھیلتے ہیں۔

Post Top Ad

Your Ad Spot