Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, March 1, 2020

کہ جے شری رام کا نعرہ لگانے والوں نے ماراانکیت شرما کے بھائی کا بڑا خلاصہ۔میرے بھائی کو مسلموں نے نہیں بلکہ جے شری رام کا نعرہ لگانے والوں نے مارا.

نئی دہلی ۔۔صداٸے وقت/1 مارچ 2020۔(  بشکریہ یو این اے نیوز)۔
==============================
دہلی میں ہونے والے تشدد میں کچھ لوگوں نے ہندو مسلم کے نام پر تشدد پھیلایا ہے۔  اس تشدد میں بہت سارے لوگ اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔  اس حملے میں 200سو سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔  انکیت شرما کو اسی تشدد میں مارا گیا تھا ، جس کی وجہ سے بہت سارے لوگوں کا کہنا ہے کہ انکیت شرما کو مسلم  برادری کے لوگوں نے قتل کیا ہے ، لیکن اب ان کے بھائی نے ایک بڑا خلاصہ کیا ہےانکیت شرما کے بھائی نے دعوی کیا ہے کہ میرے بھائی کو 'جئے شری رام' کے نعرے لگاتے ہوئے لوگوں نے مارا ہے اور انکے ہاتھوں میں تلواریں تھیں۔
 جیسا کہ امریکی اخبار دی وال اسٹریٹ جرنل کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے ، انکیت کے بھائی نے بتایا کہ جب انکت گھر واپس آرہا تھا تو فساد کرنے والوں کے ایک گروپ نے اس پر پتھراؤ کرنا شروع کردیا اور اسے قریب کی ایک گلی میں لے گئے  انہوں نے یہ بھی کہا کہ جن لوگوں نے انکیت کو قتل کیا وہ 'جئے شری رام' کے نعرے بلند کررہے تھے اور ان کے ہاتھوں میں تلواریں تھیں۔
 انکور شرما نے وال اسٹریٹ جرنل کو ٹیلیفون انٹرویو دیتے ہوئے کہا ، "وہ پتھر ، لاٹھی ، چھوریوں اور تلواروں سے لیس ہوکر آئے تھے۔"  وہ زور سے 'جئے شری رام' کے نعرے لگا رہے تھے ، کچھ نے ہیلمٹ بھی پہن رکھا انکیت شرما کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ انہیں تیز دھار چاقو سے مارا گیا ، انکور کا مزید کہنا ہے کہ فسادیوں نے انکیت کی مدد کے لئے آنے والے لوگوں پر پتھر اور اینٹیں پھینکنا شروع کردیں۔  اگلے دن انکیت کی لاش ایک نالے سے برآمد ہوئی تھی

Post Top Ad

Your Ad Spot