Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, June 22, 2020

اسلحہ ‏ایکٹ ‏کے ‏تحت ‏قانون ‏میں ‏کی ‏گٸیں ‏تبدیلیاں۔۔اب ‏ایک ‏شخص ‏تین ‏کے ‏بجاٸے ‏صرف ‏دو ‏اسلحہ ‏لاٸیسنس ‏رکھنے ‏کا ‏مجاز ‏ہوگا۔


  اسلحہ ایکٹ ایکٹ کے تحت قواعد میں کی گئی تبدیلیاں۔۔۔۔ تین اسلحہ لائسنس اپنی جگہ ، صرف دو لائسنس لائسنس ہوں گے۔۔۔اسلحہ لائسنس کی تجدید تین سال سے بڑھا کر 5 سال کردی گئی ہے
نٸی دہلی۔ /صداٸے وقت /ذراٸع / ٢٢ جون ٢٠٢٠۔
=============================
مرکزی حکومت کے تحت  وزارت قانون و انصاف (وزارت قانون و انصاف) نے اسلحہ ایکٹ 1959 میں ترمیم کرتے ہوئے متعدد تبدیلیاں کیں۔  وزارت قانون و انصاف نے ضلع مجسٹریٹ کو حکم دیا ہے کہ وہ ترمیم شدہ  دفعات / ترامیم کی فوری تعمیل کو یقینی بنائے۔  وزارت قانون و انصاف کےنٸے  آرڈر کے مطابق نئی ​​، اسلحہ لائسنس کے پاس جن کے پاس تین اسلحہ ہیں وہ صرف دو لاٸسنس رکھ سکیں گے۔ اور دو اسلحہ ہی رکھنے کے مجاز ہوں گے۔اب اپنے قریبی کوتوالی / تھانے یا اسلحہ فروش کے پاس فوری طور پر تیسرا ہتھیار جمع کروائیں ۔  اس کے بعد  مذکورہ تیسرا اسلحہ لائسنس منسوخ ہوجائے گا۔  اسلحہ لائسنسوں کی تجدید کی مدت تین سال سے بڑھا کر پانچ سال کردی گئی ہے
 وزارت قانون و انصاف کی منظوری کے تحت ، ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے تمام پولیس اہلکاروں اور تھانہ انچارج کو ہدایت کی ہے کہ وہ ضلع کے ایسے اسلحہ لائسنس ہولڈرز کی شناخت کریں جن کے پاس تین اسلحہ ہے اور اپنا تیسرا ہتھیار بغیر کسی تاخیر کے متعلقہ تھانے کے پولیس اسٹیشن میں جمع کروائیں۔  تمام انچارج انسپکٹر و پولیس اسٹیشن کو یہ ہدایت بھی کی  گٸی ہے کہ اسلحہ لائسنس کی تجدید کی تجویز کرتے وقت آپ کی رپورٹ میں یہ بھی ذکر کیا جانا چاہئے کہ متعلقہ شخص کے پاس تین لائسنس اسلحہ نہیں ہے اور اسلحہ جمع کرایا گیا ہے۔  منسوخی کی سفارش سپرنٹنڈنٹ پولیس کے توسط سے بھیجی گئی ہے۔  تمام انچارج انسپکٹرز اور تھانہ صدر بھی اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ اس معاملے کی پروگریس  رپورٹ ہر ماہ آپ کے ذریعہ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کو مہیا کریں۔  تمام ایس ڈی ایم  کو یہ بھی ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اسلحہ لائسنس  تجدید کرتے ہوئے اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ لائسنس دہندگان کے پاس دو سے زیادہ اسلحہ نہیں ہے اور اسلحہ لائسنس اور اس سے متعلق اس سلسلے میں اس کا ایک نوٹری حلف نامہ لیں  گے۔   انسپکٹر انچارج سے موصول ہونے والی تجدید کی رپورٹ میں اس کا واضح طور پر تذکرہ کرنا بالکل ضروری ہوگا۔
 تمام ایس ڈی ایم  نئے نظام کے تحت لائسنس کی پانچ سال کی مدت کے لئے فیس میں اضافہ کے ساتھ تجدید کریں گے۔  جس کے لٸے ٹریژری چالان اور بالترتیب 500 ، 750 اور نان جوڈیشل اسٹیمپ کے ذریعہ ڈیڑھ اور ڈھائی ہزار روپے جمع ہوں گے۔  اس کے علاوہ ، جو ہتھیاروں کا لائسنس  پر UIN نمبر نہیں چڑہ سکا ہے اس کا 29 جون 2020 تک UIN  پر اندراج لازمی ہے۔  بغیر uni نمبر کے اسلحہ لائسنس 30 جون 2020 سے غیر قانونی ہوجائیں گے

Post Top Ad

Your Ad Spot