Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Friday, July 17, 2020

وارانسی ‏۔۔نیپالی ‏نوجوان ‏کا ‏سر ‏منڈھا ‏کر ‏لکھا ‏گیا ‏” ‏جٸے ‏شری ‏رام ‏“۔لگواٸے ‏گٸے ‏نعرے ‏

نیپالی نوجوان  کا سر منڈوایا گیا  اور اس کے سر پر جئے شری رام لکھا گیا ، نعرے لگواٸے گٸے ۔ ہندو وادی  تنظیم وشو ہندو سینا نے  اس واقعے کی ویڈیو بنائی اور اسے سوشل میڈیا پر وائرل کردیا۔  جب ویڈیو وائرل ہوا تو پولیس حرکت میں آئی اور وشو ہندو سینا کے صدر اور ملوث افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی۔
 وارانسی۔اتر پردیش /صداٸے وقت /نماٸندہ/ 17 جولائی۔2020.
==============================
نیپالی وزیر اعظم کے پی شرما اولی کے بھگوان رام کے بیان کو لیکر اب  بھارت میں مقیم نیپالیوں  بھگتنا پڑرہا  ہے۔  ہندوستان میں بسنے والے نیپالی خود کو نفرت کی اس آگ سے بچانے کے قابل نہیں ہیں۔  تازہ ترین معاملہ وزیر اعظم نریندر مودی کے پارلیمانی حلقہ وارانسی کا ہے ، جہاں ایک وشو ہندو سینا نے نیپالی نوجوانوں کو نہ صرف   منڈوایا ، بلکہ اس کے سر پر جئے شری رام بھی لکھا۔  اسی دوران ، نیپالی نوجوان سے اپنی تنظیم اور ہندوستان کی حمایت میں نعرے لگواٸے اور نیپالی وزیر اعظم اولی کے خلاف نعرے لگواے۔
 ہندو وادی  تنظیم وشو ہندو سینا نے اس واقعے کی ویڈیو بنائی اور اسے سوشل میڈیا پر وائرل کردیا۔  جب ویڈیو وائرل ہوا تو پولیس حرکت میں آئی اور ہندو مذہبی تنظیم کے صدر  ملوث افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی۔اور گرفتاری کی قواٸد میں لگ گٸی۔  

سیاست دانوں کے سیاسی و غیر سیاسی بیانات کا زمین پر کیا اثر پڑتا ہے کہ ماحول میں زہر گھل جاتا ہے اور پھر دوسرے اس پر روٹیاں پکانا شروع کردیتے ہیں ، یہ کوئی نئی بات نہیں ہے۔
 ہندووادی  تنظیم کے ذریعہ وائرل ہونے والی ویڈیو میں گنگا گھاٹ کا نظارہ نظر آرہا ہے اور نیپالی نوجوانوں کے پیچھے سے تنظیم کے لوگ تنظیم اور ہندوستان زندہ باد کے نعرے بلند کررہے ہیں۔  ہندووادی تنظیم کے لوگ نیپالی نوجوان سے جئے شری رام کے نعرے بھی لگوا رہے ہیں۔  صرف یہی نہیں ، ہندوؤں کی تنظیم کے لوگوں نے نیپال کے وزیر اعظم اولی کے خلاف بھی نیپالی نوجوان سے  نعرہ لگوایا۔
 اس کے بعد ، نیپالی نوجوان یہ بتا رہا ہے کہ اسے ہندوستان میں کیسے روزگار ملا ہے اور ہندوستان نے اس کو سہارا دیا ہے ۔  وہ یہ بھی کہہ رہا ہے  کہ شری رام کا تعلق نیپال سے نہیں بلکہ ہندوستان سے ہے۔  آخر میں تمام جئے شری رام اور بھارت ماتا کی جئے کے نعرے لگاتے ہیں۔
 ایسا کرنے سے پہلے ، ہندوؤں کی تنظیم نے جمعرات کی صبح کو وارانسی کے چوک علاقے میں واقع نیپالی مندر کے باہر ایک انتباہی پوسٹر لگایا تھا ، جس پر لکھا گیا تھا کہ نیپالی وزیر اعظم اولی  کو پربھو شریرام کے خلاف بیان واپس لینا چاہئے ، بصورت دیگر اس کا نتیجہ ہندستان میں رہنے والے نیپالیوں کو بھگتنا پڑے گا۔

Post Top Ad

Your Ad Spot