Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, August 30, 2020

یوپی ‏پنچایت ‏انتخابات ‏میں ‏بڑی ‏تبدیلی ‏کے ‏اشارے۔۔دو ‏سے ‏زیادہ ‏بچے ‏ہوں ‏گے ‏تو ‏الیکشن ‏لڑنے ‏کے ‏اہل ‏نہیں ‏ہوں ‏گے۔


 لکھنؤ:اتر پردیش /صداٸے وقت /نماٸندہ /٣٠ اگست ٢٠٢٠۔
==============================
 اتر پردیش میں ، گرام پنچایت( پردھانی ) ، چھیتر پنچایت( بی ڈی سی ) اور ضلع پنچایت ( مہارت پردھان ).انتخابات کے حوالے سے ذرائع سے ایک بڑی خبر موصول ہوئی ہے۔  یوگی حکومت پنچایت انتخابات کی امیدواریت کے حوالے سے بڑی تبدیلیاں لاسکتی ہے۔  ذرائع کادیب کہنا ہے  کہ دو سے زیادہ بچوں والے لوگوں پر پنچایت انتخابات لڑنے پر پابندی عائد ہوسکتی ہے۔  بتایا جارہا ہے کہ یوگی حکومت آبادی پر قابو پانے کی حوصلہ افزائی کے لئے اس طرح کا فیصلہ لے سکتی ہے۔
 بتایا جاتا ہے کہ پنچایت انتخابات کے لئے امیدواروں کی کم سے کم تعلیمی لیاقت بھی طے کی جائے گی۔  خواتین کے لئے کم سے کم آٹھویں پاس تعلیمی لیاقت  محفوظ امید واروں کے لٸیے اور اسی کے ساتھ  12 ویں پاس  امیدوار ضلع پنچایت ممبر کا انتخاب لڑ سکیں گے۔
 ضلع پنچایت اور چھیتر پنچایت کی  خواتین کے لئے کم سے کم دسویں پاس ہونے  پر اتفاق کیا گیا ہے۔
 یوگی حکومت پنچایتی راج ایکٹ میں ترمیم کے لئے جلد ہی کابینہ میں ایک تجویز لاسکتی ہے۔  قانون ساز اسمبلی کے اگلے اجلاس میں ، پنچایتی راج ترمیمی ایکٹ سے متعلق ایک بل پیش کیا جاسکتا ہے۔  بتایا جارہا ہے کہ اپریل 2021 میں مجوزہ تین درجے کی پنچایت انتخابات کی تیاریوں کی تکمیل سے قبل ، یوگی حکومت کے ذریعہ اس نئے قانون کا نفاذ کیا جائے گا۔
واضح ہو  کہ تین سطحی پنچائت انتخابات کو پہلے دسمبر 2020 میں تجویز کیا گیا تھا ، لیکن کرونا کی وبا سے پیدا ہونے والے حالات کی وجہ سے ، اتر پردیش میں پنچایت انتخابات کی تیاریاں مکمل نہیں ہوسکیں ہیں۔  ایسی صورتحال میں ، انتخابات 2021 میں تجویز کیے جاتے ہیں۔
 :

Post Top Ad

Your Ad Spot