Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Friday, May 14, 2021

"عیدی ‏" ‏. ‏. ‏. ‏. ‏. ‏. ‏. ‏ شورش ‏ کشمیری ‏کی ‏ ایک ‏ نظم ‏

________ *'عیـــــدی'* ________

*شورش کاشمیری* نے یہ نظم آج سے
*55 سال قبل* کہی تھی... 

                      صدائے وقت 
==============================
*میں اپنے دوستوں کو عِید پر بھیجوں تو کیا بھیجوں*
*خدا توفیق دے تو، ھدیہء مہر و وفا بھیجوں*

*لڑکپن کی رسِیلی داستانوں کے لبادے میں*
*حدیثِ شوق، نقدِ آرزُو، آہِ رساں بھیجوں*

*جَوانی کے شگُفتہ وَلولوں کا تذکرہ لِکھ کر*
*طبیعت کا تقاضا ھے، دلِ درد آشنا بھیجوں*

*وہ راضی ہو تو، اپنی عُمر کے اس دورِ آخر میں*
*بیانِ شوق لکھوں، داستانِ ابتلاء  بھیجوں*

*'قلم قتلے' ادیبِ شہر ہونے کی رعایت ھے*
*غزل کے ریشمیں لہجے میں نظمِ دل کشا بھیجوں*

*کوئی نظمِ شگفتہ، حضرتِ احسان دانش کی*
*رشید احمد کے اسُلوبِِ دل آرا کی ادا بھیجوں*

*زبانِ میر، رنگِ میرزا، پیرایہء حالی*
*میں اس 'سہ آتشہ' میں، نغمہء بہجت فزا بھیجوں*

*خیال آتا ھے 'اس بازار' کی نیلام گاھوں میں*
*کِسی طوفان کے انداز میں، قہرِ خدا بھیجوں*

*برھنہ کَسبیوں کو عید کے ھنگامِ عشرت میں*
*فقِہیوں کی قبائیں پھاڑ کر بندِ قبا بھیجوں*

*تماشا ھائے عصمت، اور 'عالمگیر کی مسجد'*
*خدا کے نام بھی اک محضرِ آہ و بکا بھیجوں*

*میری عیدی مذاقِ عام سے ھو مختلف شورش*
*رفیقانِ قلم کو، ڈَٹ کے لڑنے کی دُعا بھیجوں*
شائع شدہ... ھفت روزہ چٹان. لاھور
7 فروری 1965
شورش کاشمیری

Post Top Ad

Your Ad Spot