Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, December 23, 2018

حرم نبوی کے استاد مولانا عزیز احمد عبد الحمید کا انتقال۔

جمیة العلماء ہند کے صدر مولانا سید ارشد مدنی و سکریٹری مولانا سید محمود مدنی نے کیا رنج و غم کا اظہار۔

صدائے وقت/ مولانا سراج ہاشمی۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . 
بستی۔۲۳؍دسمبر:مسجد نبویؐ مدینہ منورہ کے استاذحضرت مولانا عزیر احمد عبدالحمید کا گزشتہ شام مسجد نبویؐ میں انتقال ہوگیا،
انا للہ وانا الیہ راجعون ۔
حضرت مولانا عزیر احمد گزشتہ 38برسوں سے شہر ِرسول مدینہ منورہ میں مقیم تھے اور مسجد نبویؐ میں شعبہ تحفیظ القرآن میں خدمات انجام دے رہے تھے۔ مولانا کا ایک عرصہ سے معمول تھا کہ نماز عصر سے قبل مسجد نبویؐ میں حاضرہوتے اور پھر نمازِ عشاء کی ادائیگی کے بعد مسجد قبا کے قریب واقع اپنے گھر واپس تشریف لے جاتے۔ گزشتہ روز بھی وہ معمول کے مطابق مسجد نبویؐ میں حاضر ہوئے۔ نمازعصراداکی۔اور مغرب کے وقت مسجدنبویؐ ہی میں روح قفس عنصری سے پرواز کرگئی۔مولانا عزیز احمد کے رحلت کی خبر سن کر ان کے آبائی وطن سمریاواں بازار ضلع بستی میں متعلقین ومتوسلین اورتعزیت کرنے والوں کا تانتا لگ گیا۔ اچانک رحلت کی خبر سے ہر کوئی حیران رہ گیا۔ جمعیۃ علماء ہند کے صدر حضرت مولانا سید ارشد مدنی اور جنرل سکریٹری حضرت مولاناسید محمود مدنی نے اپنے گہرے رنج وغم کااظہار کرتے ہوئے ارباب مدارس اور ائمہ مساجد سے مرحوم کی مغفرت اور ترقی درجات کیلئے دعا کی گزارش کی ہے ۔ مولانا ارشد مدنی نے کہاکہ گزشتہ دنوں میں رابطہ عالم اسلامی کی کانفرنس میں شرکت کیلئے سعودیہ گیاتھا ۔ جب مدینہ منورہ حاضر ہواتو اسوقت مولانا عزیزاحمد سے ملاقات ہوئی ۔ انہوں نے اپنے گھر پر بھی مدعو کیا، بچوں سے ملاقات ہوئی ۔ کافی طویل گفتگو ہوئی۔ اس وقت قطعی یہ اندازہ نہیں تھا کہ مولانا عزیر احمدسے یہ ملاقات آخری ملاقات ثابت ہوگی۔ مولانا مدنی نے کہاکہ مسجد نبویؐ شریف میں رحلت کسی بھی کلمہ گو کیلئے قابل رشک موت ہے ۔ اللہ تعالیٰ مرحوم کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے۔ اوران کے برادران مولانا زبیر احمد، قاری ریاض احمد ، مولانا سراج احمد، فرزندان غازی ، انعام ،عمرحمیدی ،مصطفی، حافظ ، عبدالحمید اور بھانجے نعمت اللہ حمیدی کو صبرجمیل عطا فرمائے۔ آمین۔واضح رہے کہ مولانا عزیراحمد ایک علمی خانوادے کے چشم وچراغ تھے۔ ان کے والد بزرگوار حضرت مولانا عبدالحمیدصاحب بستوی، شیخ الاسلام حضرت مولانا سیدحسین احمد مدنی کے خاص تلامذہ میں سے تھے اورفدائے ملت حضرت مولانا سید اسعد مدنیؒ کے خلیفہ مجاز تھے۔ پسماندگان میں بیوہ کے علاوہ چھ صاحبزادے اور دو صاحبزادیاں ہیں۔ بڑے صاحبزادے غازی حرم نبویؐ میں استاذ ہیں جبکہ دوسرے صاحبزادے غازی انعام مدینہ منورہ میں ہی ایک مسجد میں امامت کے فرائض انجام دے رہے ہیں

مولاناسراج ہاشمی

Post Top Ad

Your Ad Spot