Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Saturday, March 30, 2019

ادبی لطیفے!!! آو ہنس لیں۔

پیشکش / صدائے وقت/ ماخوذ۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . 
ایک بنگالی نے قتیل شفائی کے پیر پکڑ لئے اور گزارش کرنے لگا "دادا ہوم بھی شاعری سیکھے گا"....
کافی منت سماجت کے بعد قتیل شفائی مان گئے اور بولے - جیسے میں بولوں ویسے ہی تم بولنا!....
بنگالی :- ٹھیک ہے -
قتیل شفائی :-
"نہ گلہ کروں گا، نہ شکوہ کروں گا.... توسلامت رہے اس دنیا میں، رب سے یہی دعا کروں گا!"....
بنگالی نے دہرایا :-
" نہ گیلا کورے گا، نا سوکھا کورے گا....
تم سالا... مت رہو اس دنیامیں,
روب سے یہی دعا کورے گا!..... "۔
. . . . . . . . . . . . . . . . .. . . . . . . . . . .   

بچہ بے تحاشا رو رہا تھا اور مشاعرے کا مزہ کرکرا ہو رہا تھا۔ ایسے میں ایک جانب سے آواز آئی:

نقش فریادی ہے کس کی شوخیء تحریر کا

بچے کی ماں مارے شرم کے چپکے سے اٹھی اور بچے کو لے کر محفل سے باہر چلی گئی۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . 
ساغر نظامی کی بہن بھی شاعرہ تھیں اور مینا تخلص رکھتی تھیں۔ ماجد حیدرابادی سے چونکہ ساغر صاحب کی چشمکیں چلتی رہتی تھیں اس لئے ساغر صاحب مشاعرے میں اس شرط پر جاتے تھے کہ ماجد صاحب کو نہیں بلایا جائے گا۔ ایک مشاعرے میں صدارت ساغر نظامی کی تھی۔ چونکہ ماجد صا حب مدعو نہیں تھے اس لئے وہ مشاعرہ سننے کے لئے سامعین میں آ کر بیٹھ گئے۔ لوگوں کو جب پتہ چلا تو سب نے شور مچا دیا کہ ماجد صاحب کو ضرور سنیں گے اور مجبورا” منتظمیں کو ماجد صاحب کو دعوت سخن دینی پڑی۔ ماجد صاحب مائک پر آئے تو کہنے لگے کہ چونکہ مجھے مدعو نہیں کیا گیا تھا اس لئے کوئی غزل ساتھ نہیں ہے البتہ دو شعر فی البدییہ کہے ہیں جناب صدر اجازت دیں تو پیش کروں۔ اجازت ملتے پر یہ دو شعر سنائے۔

پھر آ گیا ہے لوگو بر سا ت کا مہینا
لازم ہوا ہے اب تو سب کو شراب پینا
پہنچا جو میکدے میں حیران رہ گیا میں
الٹا پڑا تھا ساغر اوندھی پڑی تھی مینا.
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . .  
: پطرس بخاری ریڈیو اسٹیشن کے ڈائریکٹر تھے ایک مرتبہ مولانا ظفر علی خان صاحب کو تقریر کے لئے بلایا تقریر کی ریکارڈنگ کے بعد مولانا پطرس کے دفتر میں آ کر بیٹھ گئے۔ بات شروع کرنے کی غرض سے اچانک مولانا نے پوچھا۔ پطرس یہ تانپورے اور تنبورے میں کیا فرق ہوتا ہے۔ پطرس نے ایک لمحہ سوچا اور پھر بولے۔ مولانا آپ کی عمر کیا ہوگی؟ اس پر مولانا گڑ بڑا گئے اور بولے۔ بھئی یہی کوئی پچھتر سال ہوگی۔ پطرس کہنے لگے۔ مولانا جب آپ نے پچھتر سال یہ فرق جانے بغیر گذار دئے تو دو چار سال اور گذار لیجئے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot