Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Thursday, June 27, 2019

اناو ریلوے اسٹیشن پر مدرسہ کے 28 بچوں کو حراست میں لیا۔۔جمیتہ علمإ ہند کی کوششوں سے سبھی بچے رہا۔۔۔۔۔۔۔۔پوری خبر پڑھیں!!

*جمعیۃ علماء  ہند کی کوششوں سے مدرسہ کے 28 طلباء اور استاذ کو اناؤ جی آر پی نے چھوڑا*
*بچوں کا ایک گروپ اور استاذ ارریہ سے ضلع باندہ  کے مدرسہ اسلامیہ امدادالعلوم   میں تعلیم کے لیے جارہاتھا*
نئی دہلی 27 جون 2019/صداٸے وقت۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جمعیٰۃ علماء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی کی ہدایت کی کوششوں سے آج بالآخر سرکاری ریلوے پولس (جی آر پی) اور اناؤ یوپی پولس نے ارریہ سے گوالیر برونی اکسپریس ٹرین سے آرہے مدرسہ کے  28 کم عمر طالب علموں اور ان کے استاذ کو  چھوڑ دیا ہے- یہ بچے 24ٗجون سے اناؤ پولس کی تحویل میں تھے-

مولانا حکیم الدین قاسمی نے بتایا کہ ارریہ بہار کے کسی گاؤن سے بچوں کا ایک گروپ اور ایک استاذ  گوالیر برونی اکسپریس کے ایس 9  ڈبے میں سفر کررہا تھا جس کے ذریعہ وہ مدرسہ اسلامیہ امدادالعلوم قصبہ کلینگر تحصیل ترینی ضلع باندہ میں تعلیم کے لیے جارہا تھاکہ اچانک کسی غلط اطلاع پراناؤمیں جی آر پی نے 24ٗجون کو دوپہر دو بجے  نیچے اتار کر پوچھ گچھ کی، اس موقع پر بچوں کی فلاح و بہبود محکمہ کے افسران بھی موجود تھے۔ بعد میں بچوں اور ان کے استاذ کو حراست میں لے لیا گیا-
اطلاع ملنے پر جمعیۃ علماء ہند کے سکریٹری مولانا حکیم الدین نے جی آر پی افسر اور اناؤ ضلع انتظامیہ سے بات چیت کی جس کے بعد بچوں کو ان کے والدین کے حوالے کردیا گیا- اب وہ بچے مدرسہ جانے کے لیے آزاد ہیں-
متذکرہ مدرسہ کے مہتمم مولانا عبدالسلام صاحب نے جمعیۃ علماء ہند کا شکریہ ادا کیا ہےجس نے بروقت اقدام کرکے ان کی مدد کی -

Post Top Ad

Your Ad Spot