Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, June 3, 2019

عید کے موقع پر ایک نظم " عید پر ملو گے نا" !!!

نظم از/ ہاجرہ نور زریاب/ صدائے وقت۔
. . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . . 
۔۔۔۔۔۔۔۔۔""عید پر ملو گے نا"۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جو بھی ھے تمھیں شکوہ .مجھ سے تم کہو گے نا عید پر ملوگے نا.
میری شام ھجراں کو نور سے بھروگے نا عید پر ملوگے نا
۔
ہاجرہ زریاب۔

چاند رات یوم عید سب تمہیں   ودیعت ہیں قلب وجاں کی راحت ہے
  میں بھی تو تمہاری ہوں
تم مرے بنوگے نا  عید پر ملو گے نا


ریشمی کلائی میں چوڑیاں محبت کی تم کو یاد کرتیں ہیں
چاند رات کو آکر ، ان کو چوم لوگے نا، عید پر ملوگے نا
بے رخی جو کی تم نے میں معاف کرتی ھوں دل کو صاف کرتی ھوں
تم بھی آکے باھوں میں مجھ کو تھام لوگے نا عید پر ملوگے نا.

کوئی بدگمانی ہے یا کہ ہے گلہ مجھ سے, کیوں ہو اب خفا مجھ سے
سب خطائیں  تم میری درگزر کروگے نا عید پر ملو گے نا

بات کرتے رہنے سے وہ گھڑی بھی آتی ہے, بات بن ہی جاتی ہے
بات کچھ سناؤ گے, بات کچھ سنو گے نا, عید پر ملو گے نا

ایسی ساعتیں زریاب جب گلے لگاتی ہیں, نقش چھوڑ جاتی ہیں
رسم یہ نبھانے کو, تم گلے لگو گے نا, عید پر ملو گے نا

ہاجرہ نور زرؔیاب آکولہ مہاراشٹر انڈیا۔


Post Top Ad

Your Ad Spot