Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Saturday, July 6, 2019

۔۔۔۔حج۔۔؟ ۔۔اسلامیات کے موضوع پر بہترین تحریر۔


از قلم -: محمد اجوداللہ پھولپوری/صداٸے وقت۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اسلام کے ارکان اساسی میں حج بیت اللہ آخری اور تکمیلی رکن کی حیثیت رکھتا ھے
وقت معینہ پر اللہ کے دیوانوں کا اسکے دربار میں حاضر ھونا اور اسکے خلیل حضرت ابراھیم علیہ السلام کی سنتوں کی نقل کرتے ھوئے ان سے اپنی وابستگی کا اظہار کرنا اور جذبات ابراھیمی کے رنگ میں سرشاری کا نام حج ھے

حج کی فرضیت کا حکم راجح قول کے مطابق ۹ھجری میں آیا اور فرضیت کے اگلے سال یعنی ۱۰ ھجری میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے صحابۂ کرام کی ایک بڑی تعداد کے ساتھ حج اداء فرمایا جسے تاریخ حجۃ الوداع کے نام سے یاد کرتی ھے آیت کریمہ "الیوم اکملت لکم دینکم وأتممت علیکم نعمتی" کا نزول اسی حجۃالوداع کے موقعہ پر خاص میدان عرفات میں ھی ھوا حج کے تکمیلی رکن ھونے کا اس آیت کریمہ میں ایک لطیف اشارہ بھی ھے

سفر حج ایک دیوانگی کا سفر ھے عاشق ناتمام کے تکمیل عشق کا سفر ھے اس سفر کی حالت اور اسمیں کئے جانے والے اعمال کا جائزہ لیا جائے تو یہ بات کلی طور پر واضح ھوجاتی ھے کہ واقعی پورا سفر عشق کی مکمل داستان ھے رنگ برنگے کپڑوں کو چھوڑ کر ایک کفن نما لباس (احرام) زیب تن کرنا ننگے سر بے تیل کے بالوں کو کھلا رکھنا خوشبو اور رنگ و روغن سے خود کو دور رکھتے ھوئے گلیوں اور بازاروں میں لبیک لبیک کی صدا لگاتے ھوئے دیوانہ وار گھومنا بیت اللہ کے گرد دنیا ومافیھا سے بے خبر ھوکر چکر لگانا اسکے در و دیوار سے لپٹنا اسے چومتے ھوئے گریہ و زاری کرنا صفا و مروہ کے چکر پہ چکر لگانا مکہ کی گلیوں سے نکلتے ھوئے منی و عرفات تو کبھی مزدلفہ میں وقت لگانا یہ وھی اعمال تو ھیں جو محبت کے ماروں سے سرزد ھوا کرتے ھیں
خوش قسمت ھیں وہ افراد جن کو مالک کائنات کے دربار میں حاضری کا شرف حاصل ھوا اگر کسی بندہ کو صحیح اور مخلصانہ حج کا (حج مبرور) موقعہ نصیب ھوجائے اور ابراھیمی ع و محمدی ص نسبت کا کوئی زرہ اسکو عطاء ھوجائے تو گویا اسکو سعادت کا اعلی مقام حاصل ھوگیا اور وہ نعمت عظمی اسکے ھاتھ آگئی جس سے بڑی کسی نعمت کا اس دنیا میں تصور بھی محال ھے
نازم بچشم خود کہ جمال تو دیدہ است
افتم بہ پائے خود کہ مکویت رسیدہ است
ہردم ہزار بوسہ زنم دست خویش را
کہ دامنت گرفتہ بسویم کشیدہ است

Post Top Ad

Your Ad Spot