Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, October 20, 2019

پی ایچ ڈی سنگھرش مورچہ نے پوروانچل یونیورسٹی کا علامتی جنازہ نکال کر کیا احتجاج۔

جون پور ۔۔۔اتر پردیش۔صداٸے وقت/نماٸندہ)۔
٢٠ اکتوبر ٢٠١٩۔
==============================
پی ایچ ڈی سنگرش مورچہ کے بینرل تلے اتوار کے روز شہر کے رام گھاٹ دیویا پرکاش سنگھ کی قیادت میں پوروانچل یونیورسٹی کے وائس چانسلر کا علامتی جنازہ نکال کر احتجاج کرتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف نعرے بازی کی گئی اور علامتی لاش کو نذر آتش کیا گیا۔
اس موقع پر مورچہ کے نمائندے دیویا پرکاش سنگھ نے کہا کہ ہم متاثرہ امیدواروں اور مختلف سیاسی تنظیموں نے باہمی تعاون سے اتر کر ریاستی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ پورانچل یونیورسٹی کے پی ایچ ڈی داخلے کے نتیجے میں ہونے والی بدعنوانی کی منصفانہ جانچ کرکے وائس چانسلر کو فوری اثر سے ہٹا دیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ایچ ڈی کے متاثرین اپنے جائز مطالبات کے سلسلے میں طویل عرصے سے وائس چانسلر سے بات کرنے کے لئے دفتر کے چکر لگارہے ہیں، لیکن طلباء کے مطالبات کو پورا کرنا تو دور، ان طلباء کو ان کے سکیورٹی اہلکاروں کے زریعے بھگا دیا جا رہا ہے۔ اب طالب علم انصاف کے لئے احتجاج کررہا ہے، جب تک ہمارے مطالبات پورے نہیں ہوجاتے، ہم اس طرح کا مظاہرہ کرتے رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ گورنر کو پی ایچ ڈی کے امتحان کے نتیجے میں دھاندلی کے لئے ضلع مجسٹریٹ کے ذریعے آگاہ کیا گیا تھا، لیکن کئی دن گزرنے کے بعد اب تک کوئی ٹھوس کاروائی نہیں ہوسکی ہے۔
نوجوان ایس پی لیڈر اتل سنگھ اور ایڈوکیٹ وکاس تیواری نے مشترکہ طور پر کہا کہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے زریعے یونیورسٹی کی ترقی کے لئے جمع کروڑوں کے فنڈ کوغیر حساب کتاب خرچ کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ یونیورسٹی میں فرضی تقرریوں کو تقرری کیا جارہا ہے۔ پی ایچ ڈی مورچہ کے مسلسل مظاہروں کے باوجود انتظامیہ لا علم بنا ہوا ہے۔ اس موقع پر ویراج ٹھاکر، سندیپ یادو، انوشری، چندرپال، امت سریواستو، ارون یادو، نیرج یادو، پریانکا یادو، وجئے سنگھ، وجئے پرتاپ، پنکج مشرا، سچن یادو، ابھے سنگھ، سنجے سونکر، رودریش ترپاٹھی، شبھم مشرا، ابھیشیک یادو ہنومنتھا، شبھم، رسبھ، امن،ویرو سمیت درجنوں لوگ موجود رہے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot