Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, October 6, 2019

پی ایچ ڈی امتحانات میں بدعنوانی کا الزام۔۔۔۔طلبہ نے وی سی کا پتلا کیا نذر آتش۔

جون پور۔۔۔اتر پردیش (نماٸندہ)۔
=============================
پوروانچل یونیورسٹی میں سابقہ پی ایچ ڈی امتحانات کے نتائج میں بڑے پیمانے پر بدعنوانی کو لیکر مشتعل طلباء نے شہر کے سدبھاونا پل پر پی ایچ ڈی سنگھرش مورچہ کے نمائندے دیو پرکاش سنگھ کی قیادت میں ضلع کی تمام سیاسی تنظیموں کے عہدیداروں کی موجودگی میں پوروانچل یونیورسٹی کے وائس چانسلر راجارام یادو کی علامتی تصویر نذر آتش کر ناراضگی کا اظہار کیا۔

انھوں نے بتایا کہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے زریعے سازشن پی ایچ ڈی کے داخلہ امتحان میں پاس ہونے والے نتائج آنے کے بعد بھی فیل کر دیا گیا۔ اس کے پیچھے ان کا سیاہ ارادہ واضح ہے۔ وہ یونیورسٹی کے معزز عہدے کو ختم کر رہے ہیں۔ ایسے نااہل وائس چانسلر کو گورنر خود برخاست کردینا چاہئے۔
انہوں نے کہا کہ ضلع کی تمام نوجوان سیاسی تنظیموں نے آج ایک ہفتہ کے بعد پی ایچ ڈی داخلہ امتحان میں فیل ہونے والے امیدواروں کی حمایت میں اپنی حمایت کی اور سب نے ایک آواز میں کہا کہ اگر امیدواروں کی شکایت کا تصفیہ تین دنوں میں نہیں کیا گیا تو وہ ہائی کورٹ سے لیکر سپریم کورٹ کر اس کی لڑائی لڑیں گے۔سماجوادی پارٹی کے لیڈر اتل سنگھ اور ایڈوکیٹ وکاس تیواری نے بتایا کہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر راجارام یادو کو ایکوسٹیکل سوسائٹی آف انڈیا نئی دہلی نے 17 اکتوبر کو رووینشا یونیورسٹی، کٹک میں "پروفیسر ایس بھگونتم قومی ایوارڈ" دیا جائے گا، لیکن وائس چانسلر معاشرتی سننے کے معاملے پر بد زبانی اور غلط کاموں پر توجہ نہیں دیا جارہا ہے۔اس موقع پر ستیویر سنگھ، وراج ٹھاکر، ششانک تیواری، ششانک مشرا، تانو سری، شعیب،پرتک سنگھ، سندیپ کمار، سنجے سونکر، نیرج یادو، ابھے سنگھ، امت سریواستو، پریانکا یادو، شیوم سنگھ گوڑ،امن،رودرش ترپاٹھی سمیت دیگر لوگ موجود رہے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot