Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, February 24, 2020

دہلی میں سنگھی آتنک وادی رات بھر دکانیں لوٹتے رہے۔ پولس تماش بین بنی رہی۔

نٸی دہلی /صداٸے وقت / ذراٸع  25فروری2020۔
==============================
 گذشتہ پیر کو دارالحکومت دہلی کے بھجن پورہ ، گوکولپوری ، چاند باغ ، ماج پور ، ظفر آباد کے علاقوں میں شہری ترمیمی قانون (سی اے اے) کے مخالفین اور حامی آمنے سامنے آئے۔ تشدد کے نتیجے میں بھاری پتھراؤ اور فائرنگ ہوئی۔ پٹرول بم استعمال کیا گیا۔ اس تشدد میں اب تک پولیس کانسٹیبل سمیت پانچ افراد ہلاک ہوگئے۔ بھجن پورہ کے قریب چاند باغ میں رتن لال نامی ہیڈ کانسٹیبل کی موت ہوگئی۔ اسی دوران ، محمد فرقان بھی گولی لگنے سے ہلاک ہوگئے۔ شاہدرہ کے ڈی سی پی امت شرما سمیت درجنوں پولیس اہلکار بھی اس تشدد میں زخمی ہوئے۔ گوکلپوری ٹائر مارکیٹ میں 20 دکانیں جل کر راکھ ہوگئیں۔ ان علاقوں کے حالات ابھی بھی کشیدہ ہیں۔ دہلی کے کروال نگر گونڈا چوک میں آج (منگل) کی صبح 6 فائر کالیں ہوئیں۔ بتایا جاتا ہے کہ گاڑیوں اور دکانوں میں آگ لگائی جارہی ہے۔

محکمہ فائر نے اس کے بارے میں بتایا کہ شمال مشرقی دہلی میں اب بھی 6 مقامات پر آگ لگانے کی کالیں موصول ہوئی ہیں۔ کل شام سے آنے والی فائر کالیں ابھی رک نہیں سکی ہیں۔ گوکلپوری ٹائر مارکیٹ میں 20 دکانیں جل کر راکھ  ہوچکی ہیں۔ پیر کے روز ہونے والے تشدد میں اس مارکیٹ میں آگ لگائی گئی تھی۔ شرپسندوں نے فائر بریگیڈ کی گاڑیوں کو بھی آگ لگا دی۔ دو گاڑیوں میں توڑ پھوڑ کی گئی ہے۔ واقعے میں 3 فائر مین زخمی ہوئے۔ انہیں پتھر مارا گیا ہے۔ پیر سے اب تک کل 45 فائر فائٹنگ کالز موصول ہوئی ہیں۔ اسی کے ساتھ ہی ، ماجو پور میں صورتحال اب بھی بہت خراب ہیں۔ راتوں میں یہاں دکانوں میں توڑ پھوڑ اور لوٹ مار ہوتی رہی۔ لوگوں کو مارا پیٹا جارہا ہے۔ مسافروں کو لوٹا جارہا ہے۔ببر پور میں بھی پتھراؤ جاری ہے۔

دہلی کے وزیر ماحولیات گوپال رائے نے پیر کی شب لیفٹیننٹ گورنر انیل بیجل کی رہائش گاہ کے باہر شمال مشرقی دہلی میں امن و امان پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے ڈیرے ڈالے رہے۔ رائے نے کہا کہ ان کے حلقہ بابرپور میں صورتحال کشیدہ ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ علاقے میں پولیس فورس تعینات نہیں ہے۔ رائے نے ٹویٹر پر ایک ویڈیو پوسٹ کرتے ہوئے کہا ، 'میں امن و امان کی بگڑتی صورتحال پر تبادلہ خیال کرنے لیفٹیننٹ گورنر کی رہائش گاہ کے باہر پہنچا ہوں۔ تشدد میں ملوث افراد فائرنگ کر رہے ہیں۔

اہم بات یہ ہے کہ پچھلے اتوار کو دہلی کے علاقے جعفر آباد میں اینٹی سی اے اے اور حامیوں کے مابین جھڑپ ہوئی تھی۔ دونوں طرف سے پتھراؤ ہوا تھا لیکن پولیس نے کوئی کاروائی نہیں کی۔ جس کے بعد ، پیر کے روز ، بھجن پورہ ، چاند باغ ، گوکولپوری اور سلیم پور سے ملحقہ علاقوں میں اینٹی سی اے اے اور حامی آمنے سامنے آئے اور ہنگامہ آرائی بڑھ گئی۔ بھجن پورہ کے قریب چاند باغ میں ہیڈ کانسٹیبل سمیت پانچ افراد کی موت ہوگئی۔ حساس علاقوں میں سیکیورٹی فورسز کی ایک بڑی تعداد تعینات کردی گئی ہے۔ ان جگہوں پر دفعہ 144 نافذ کردی گئی ہے۔ ظفرآباد اور قریبی علاقوں میں متعدد میٹرو اسٹیشن بھی بند کردیئے گئے ہیں۔ فسادات کے دوران بہت ساری تصاویر اور ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہیں۔ سوشل میڈیا صارفین اور آپ کے قائدین بی جے پی لیڈر کپل مشرا کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کررہے ہیں۔انہوں نے الزام لگایا ہے کہ کپل مشرا کے متنازعہ بیان کے بعد ہی دارالحکومت میں تناؤ بڑھ گیا ہے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot