Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, March 23, 2020

لکھنئو کے گھنٹہ گھر پر سی اے اے مخالف احتجاج ملتوی، دھرنے سے اٹھیں خواتین، بولیں۔ کورونا کا اثر ختم ہونے پر دوبارہ بیٹھیں گی

کورونا وائرس کے خوف کے پیش نظر لکھنؤ کے گھنٹہ گھر میں شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف احتجاج ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے.
لکھنؤ۔..اتر پردیش /صداٸے وقت /ذراٸع۔/٢٣ مارچ ٢٠٢٠۔
==============================
کورونا وائرس کو تیسرے مرحلے تک پہنچنے سے روکنے کے لئے اتر پردیش حکومت نے ریاست کے 16 اضلاع کو لاک ڈان کردیا ہے۔ اسی کے ساتھ ہی ، کورونا وائرس کے خوف کے پیش نظر لکھنؤ کے گھنٹہ گھر میں شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف احتجاج ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے.
دراصل ، گذشتہ کئی مہینوں سے لکھنؤ کے گھنٹہ گھر پر سی اے اے اور این آر سی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ چل رہا تھا۔ احتجاج کورونا وائرس کی وجہ سے ملتوی کردیا گیا ہے۔
دھرنے پر بیٹھی خواتین کا کہنا ہے کہ ایک بار جب کورونا کا اثر ختم ہوجائے گا تو ہم پھر بیٹھیں گے۔ اے سی پی چوک درگا شنکر تیواری نے اس کی تصدیق کی ہے۔ اس دوران اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ وبا کا خطرہ ابھی ٹلا نہیں ہے اور لاپرواہی بھاری پڑ سکتی ہے۔ اس صورتحال میں محتاط رہنا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ یوپی میں صورتحال مکمل طور پر قابو میں ہے۔
اس دوران ، بیماری مزید نہ پھیلے اس کے لئے ریاست میں پہلے مرحلے میں لکھنؤ ، نوئیڈا ، غازی آباد ، کانپور ، مراد آباد ، وارانسی ، میرٹھ ، پریاگ راج ، علی گڑھ ، بریلی ، گورکھپور اور سہارنپور سمیت 15 اضلاع کو 23 مارچ سے 25 مارچ تک مکمل طور پر لاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے۔اس دوران ان شہروں میں سینیٹائزیشن کا کام بھی کیا جائے گا۔

Post Top Ad

Your Ad Spot