Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Friday, March 6, 2020

یوگی سرکار نے سی اے اے کے خلاف ہوئے تشدد میں ملوث ملزمین کے نام فوٹو سمیت پورے لکھنؤ میں ہورڈنگ لگوائی۔

لکھنؤ...اتر پردیش / ذراٸع (صداٸے وقت ۔6مارچ2020).
=============================
شہریت کے قانون کے خلاف مظاہرے کے دوران لکھنؤ کے کئی اہم مقامات پر متعدد ہورڈنگز لگائے گئے ہیں ، جن میں ملزموں کی تصاویر اور پتے بھی شامل ہیں جو تشدد اور عوامی املاک کو نقصان پہنچا رہے تھے۔ اس ذخیرہ اندوزی میں ، ان لوگوں سے سرکاری املاک کو پہنچنے والے نقصان پر جرمانہ ادا کرنے کو کہا گیا ہے۔ آپ کو بتادیں کہ دسمبر کے مہینے میں لکھنؤ میں شہریت کے قانون کے خلاف بہت سارے مظاہرے ہوئے تھے۔ اس تشدد کے دوران عوامی املاک کو بھی نقصان پہنچا۔ ذخیرہ اندوزی میں کہا گیا ہے کہ اگر یہ افراد جرمانہ ادا نہیں کرتے ہیں تو ان کی جائیداد ضبط ہوجائے گی۔
 تاہم ، یہ ابھی تک واضح نہیں ہوا ہے کہ جب ان افراد کو پہلے ہی ذاتی سطح پر نوٹس دیا گیا ہے ، تو پھر ریاستی حکومت نے اس طرح کے ہورڈنگز کیوں لگائے ہیں،ہورڈنگ میں تصاویر رکھنے والوں میں کارکن اور سیاستدان صدف ظفر ، وکیل محمد شعیب ، تھیٹر سے وابستہ دیپک کبیر ، سابق آئی پی ایس ایس آر داراپوری شامل ہیں۔ یہ ضمانت پر ہیں، کہا جاتا ہے کہ حکومت سے جائیداد ضبط کرنے کے فرمان کے خلاف کورٹ میں لڑائی لڑیں گے۔
 آپ کو بتاتا چلوں کہ ضمانت دیتے وقت عدالت کو پتہ چلا ہے کہ پولیس ان میں سے بہت سے افراد کے خلاف الزام ثابت کرنے کے لئے ثبوت فراہم نہیں کر سکی ہے۔ فروری کے مہینے میں بھی ، الہ آباد ہائی کورٹ نے کانپور کے ایک شخص کے خلاف جائیداد ضبط کرنے کے حکومتی حکم پر اسی طرح روک دیا تھا۔
 ذرائع کا کہنا ہے کہ لکھنؤ میں اس طرح کے ہورڈنگز لگانے کا حکم براہ راست چیف منسٹر کے دفتر سے آیا ہے۔دسمبر کے مہینے میں ہونے والے تشدد پر ، سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ نے بھی متنازعہ بیان کو 'انتقام' دیا تھا۔ انہوں نے کہا ، 'ہم ان کے ساتھ سختی سے نمٹیں گے۔ میں خود اس کی نگرانی کر رہا ہوں۔تشدد میں ملوث افراد کے اثاثے ضبط کرلیں گے،سی سی ٹی وی میں بہت سے چہروں کی نشاندہی کی گئی ہے۔ ہم ان کی جائداد ضبط کریں گے اور ایسے لوگوں سے انتقام لیں گے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot