Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Wednesday, April 1, 2020

ملک میں کورونا کاقہراختیارکررہاہے سنگین صورتحال:24گھنٹوں میں ریکارڈکیے گئےاتنے نئے معاملے۔

وزارت صحت کے ترجمان لو اگروال نے بدھ کو یہاں پریس کانفرنس میں بتایا کہ کل سے آج تک ملک میں کورونا وائرس انفیکشن کے معاملوں میں تیزی کی وجہ سے دہلی کے نظام الدین میں تبلیغی جماعت میں شامل ہوئے لوگوں کو ملک کے مختلف حصوں میں جانا ہے۔

نئی دہلی/صداٸے وقت /ذراٸع / یکم اپریل 2020.
==============================
:ملک کے مختلف ریاستوں میں کل سے آج تک کورونا وائرس (کوویڈ 19)کے 386نئے معاملے سامنے آنے کے بعد اس سے انفیکٹیڈ لوگوں کی تعداد بڑھکر 1637 ہوگئی اور ہلاک شدگان کی تعداد 38 ہوگئی ہے۔ان میں موت کے تین نئے معاملے ہیں جبکہ  کورونا وائرس کے 132 لوگ ٹھیک ہوچکےہیں۔وزارت صحت کے ترجمان لو اگروال نے بدھ کو یہاں پریس کانفرنس میں بتایا کہ کل سے آج تک ملک میں کورونا وائرس انفیکشن کے معاملوں میں تیزی کی وجہ سے دہلی کے نظام الدین میں تبلیغی جماعت میں شامل ہوئے لوگوں کو ملک کے مختلف حصوں میں جانا ہے۔
اس کے علاوہ جہاں پر بھی کورونا وائرس کے پازیٹو معاملے پائےگئے ہیں وہاں کی ریاستی حکومتوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ جہاں بھی ایسے معاملے دیکھے گئے ہیں وہاں سختی کے ساتھ جانچ مہم چلا کر ممکنہ معاملوں کی ٹریسنگ کی جائے اور ضرورت پڑنے پر انہیں قرنطینہ میں رکھا جائے یا اسپتال میں رکھا جائے۔اس کے ساتھ ہی تبلیغی جماعت سے 1800 لوگ جو دہلی میں تھے ان کو نو اسپتالوں اور قرنطینہ سینٹروں میں منتقل کردیاگیاہے لیکن یہ سبھی کو دھیان میں رکھنا ہے کہ کسی ایک شخص کی لاپرواہی پورے سماج کےلئے خطرہ بن سکتی ہے اور ایسے وقت میں سبھی کو مذہبی پروگراموں کے انقعاد سے بچنا چاہئے۔لاک ڈاؤن کے دوران سماجی دوری کی سبھی ہدایات پر مستعدی سے عمل ہو۔انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ پچھلے دو دنوں میں کورونا انفیکشن سے متاثرہ لوگوں کی تعداد میں جو اضافہ ہوا ہے ،وہ قومی رجحان کو ظاہر نہیں کرتا۔
انہوں نے بتایا کہ کسی بھی طرح کی غلط فہمیوں کا حل نکالنے کےلئے وزارت صحت نے ایک تکنیکی ویب سائٹ بنائی ہے جس میں جوائنٹ سکریٹری سطح کے ایک افسر اور ایمس کے ماہر ڈٓاکٹر اپنی طرف سے ضروری تکنیکی اطلاعات مہیا کرائیں گے۔انہوں نے کہاکہ اس لاک ڈاؤن کے وقت میں سبھی لوگ سماجی دوری پر پوری طرح عمل کریں اور ملک کو اس لڑائی میں جیت دلائیں۔
وزار داخلہ کی ترجمان پونے سلیلا شریواستو نے بتایا کہ مرکزی حکومت ملک بھر میں سبھی ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام ریاستوں میں لاک ڈاؤن کے اصولوں پر سختی کرنے کو یقینی بنا رہی ہے،ضروری اشیا اور خدمات کی حالت پر باریکی سے نظر رکھ رہی ہے۔اس کے علاوہ مرکزی حکومت ریاستوں میں ضروری اشیا کی فراہمی اور ان کی قیمتوں پر نظر رکھ رہی ہے اور ابھی تک حالات اطمینان بخش ہیں۔
شریواستو نے بتایا کہ ملک میں مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام ریاستوں میں 21486 راحت کیمپ لگائے گئے ہیں اور ان میں چھ لاکھ 75ہزار 193لوگوں کےرہنے کی سہولت ہے اور 25لاکھ لوگوں کو کھانا دینے کی سہولت مہیا کی گئی ہے۔یہ سہولیات غریب اور محروم طبقے کے لوگوں،ان میں رہنے والے نقل مکانی کرنے والے مزدوروں کو بھی مہیا ہے جو اپنی منزل پر پہنچ گئےہیں۔نقل مکانی کرنے والے مزدوروں کی حالت قابو میں ہے۔
کابینہ سکریٹری نے آج سبھی ریاستوں کے اہم سکریٹریوں کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ اور ضروری اشیا کی فراہمی کےلئے حالات کا جائزہ لیا ہے۔ملک کے مختلف حصوں میں کارگو موومنٹ کی حالت بہتر ہے اور امید ہے کہ لاک ڈاؤن پر سختی سے عمل کر کے ہم کوویڈ کے چیلنج سے نمٹ سکتے ہیں۔آئی سی ایم آر کی وبائی امراض کے محکمے کے سربراہ ڈاکٹر رمن آر گنگاکھیڑکر نے بتایا کہ اس وقت ملک میں آئی سی ایم آر کے تحت 126سرکاری لیب کورونا وائرس کی جانب کررہی ہیں اور اب تک 47951 ٹیسٹ کرلئےگئے ہیں اورکل تک کُل 4562 ٹیسٹ کئےگئے تھے اور ابھی تک 38 فیصد صلاحیت استعمال ہوئی ہے۔نجی شعبوں کی 51لیب کو بھی کورونا وائرس جانچ کی اجازت دی گئی ہےاور کل ان میں 816 مریضوں کی جانچ کی گئی تھی۔

Post Top Ad

Your Ad Spot