Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Sunday, May 10, 2020

بی ‏ایس ‏پی ‏ممبر ‏پالیمنٹ ‏کنور ‏دانش ‏علی ‏نے ‏لیبر ‏قانون ‏کے ‏یوگی ‏حکومت ‏کے ‏فیصلے ‏کو ‏بتایا ‏آمرانہ۔

بی ایس پی لیڈر دانش علی نے ایک بیان جاری کرکےکہا کہ حکومت کو ایسے حالات میں سنجیدگی کا اظہار کرنا چاہئے تھا، مزدوروں کے زخموں پر مرہم لگانے کی ضرورت تھی۔ اترپردیش کی حکومت کو اپنے اس آمرانہ فیصلے کو فوری طور پر واپس لینا چاہئے۔

نٸی  دہلی:/صداٸے وقت /ذراٸع / ١٠ مٸی ٢٠٢٠۔
==============================
 بہوجن سماج پارٹی کےلیڈر اور لوک سبھا رکن پارلیمنٹ کنور دانش علی نے اتوار کو کہا کہ کورونا وبا کے سبب ملک میں نافذ لاک ڈاؤن کی وجہ سے محنت کش طبقہ دربدر کی ٹھوکریں کھا رہا ہے، ایسے میں اتر پردیش کی یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کی طرف سے تین سال تک کےلئے مزدور قوانین کو ملتوی کردینا، ان کے مفادات اور حقوق پر براہ راست حملہ ہے۔ دانش علی نے ایک بیان جاری کرکےکہا کہ حکومت کو ایسے حالات میں سنجیدگی کا اظہار کرنا چاہئے تھا، مزدوروں کے زخموں پر مرہم لگانے کی ضرورت تھی۔
انہوں نے کہا کہ اترپردیش کی حکومت کو اپنے اس آمرانہ فیصلے کو فوری طور پر واپس لینا چاہئے۔ لیبر قوانین کو ختم کرنے سے سرمایہ دارانہ طاقتیں مزید مضبوط ہوں گی ۔ حکومت نے ہمیشہ مزدوروں کے مفادات کو درکنار کرکے امیر طبقات کا ساتھ دیا، جب لاک ڈاؤن میں ملک کا مزدور طبقہ زندگی اور موت کے درمیان جھول رہا ہے، ایسے میں مزدوروں کو سہارا دینے کے بجائے یوگی حکومت نے ان کے مفادات پر حملہ کیا ہے۔
بی ایس پی رکن پارلیمنٹ دانش علی نے کہا "مزدور ملک کی تعمیر کی بنیاد ہوتے ہیں۔ حکومت نے ملک کی بنیاد کو مضبوط کرنے کے بجائے کمزور کرنے کا کام کیا ہے جو کہ قابل مذمت ہے۔ اب ملک کورونا سے لڑ رہا ہے اور یہ اندازہ نہیں لگایا جا سکتا کہ یہ بحران کب تک جاری رہے گا، جس سے ملک کی اقتصادی حالت بگڑنے کا خدشہ ہے۔ اگر ہم نے مزدوروں کے مفادات کو نظر انداز کیا تو ہم ملک میں صنعتوں کو کیسے چلائیں گے اور اقتصادی صورتحال کو پٹری پر کس طرح لا پائیں گے ۔ آئین ہند کے معمار بابا بھیم راؤ امبیڈکر نے بھی آئین کے ذریعہ مزدور طبقے کو جو حقوق دیے تھے، حکومت انہیں چھیننے کا کام کر رہی ہے۔ ایسے میں مزدوروں کا حکومت سے اعتماد اٹھے گا اور بحران پیدا ہوگا" ۔

Post Top Ad

Your Ad Spot