Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Tuesday, July 28, 2020

ڈبلیو ‏ایچ ‏او ‏کا ‏نیا ‏انکشاف ‏” ‏ریاح ‏خارج ‏“ ‏ہونے ‏سے ‏بھی ‏پھیل ‏سکتا ‏ہے ‏کورونا ‏واٸرس۔


 صداٸے وقت /ذراٸع ۔٢٨ جولاٸی ٢٠٢٠۔
=============================
 کورونا کی وبا پوری دنیا میں خوف کا باعث بنی ہوئی ہے۔  ڈبلیو ایچ او بھی اس پر متعدد بار متعدد طرح کے  بیانات جاری کررہا ہے۔  ڈبلیو ایچ او کو کبھی کبھی یہ کہتا ہے کہ یہ کان کے ذریعہ انفیکشن  کا سبب بن سکتا ہے ، اور کبھی کہتے ہیں کہ یہ آنکھوں سے ہوسکتا ہے۔  اب ڈبلیو ایچ او نے ایک نئی معلومات شیئر کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اگر کوئی شخص ” ریاح “ خارج کرے اور وہ کورونا متاثر ہے تو کوٸی بھی شخص ریاح کو  سونگھنے کے بعد  کورونا وائرس کا شکار ہوسکتا ہیے۔
 ڈبلیو ایچ او نے کہا ہے کہ انسانی جسم میں پیدا ہونے والی گیس سے متعدد قسم کے رسیلی گیس نکلتی ہے۔ اس  میں بہت ساری قسم کے واٸرس اور جراثیم بھی شامل رہتے  ہیں۔  اسی طرح  اس گیس کےذریعہ  سے کورونا وائرس بھی جسم سے نکلتا ہے۔
 اگر کوئی شخص 10 منٹ کے اندر اس جگہ  سے گزرتا ہے اور  ریاح  کی  مہک آتی ہے  تو وہ اس کی ناک کے ذریعے کورونا جسم میں داخل ہوجائے گا۔
 اس بارے میں معلومات دیتے ہوئے ڈبلیو ایچ او نے بتایا کہ ایک انسان جب ریاح خارج کرتا ہے تو اس کی مہک و اثر  10 منٹ تک ہوا میں موجود ہوسکتا ہے۔ اور جب موجودہ شخص سانس لیتا ہے تو سانس کے ذریعہ کورونا جسم میں داخل ہوجاتا ہے ۔ ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس نے  بتایا کہ  "اگر کوئی شخص ماسک کے بغیر اس جگہ سے گزرتا ہے تو ، کسی کو کورونا کے انفیکشن ہونے سے بچایا نہیں جاسکتا۔ اسی کے ساتھ ہی ایک سے زیادہ افراد کے انفیکشن ہونے کا بھی امکان ہے۔
 بشکریہ۔۔۔ڈیلی ہنٹ۔

Post Top Ad

Your Ad Spot