Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, August 31, 2020

سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی کا انتقال، بیٹے نے ٹویٹ کرکے کی تصدیق.

ملک کے سابق صدر پرنب مکھرجی کا پیر کو انتقال ہوگیا ہے۔ ان کے بیٹے ابھیجیت مکھرجی نے ٹویٹ کرکے سابق صدر کے انتقال کی تصدیق کی ہے۔ پرنب مکھرجی طویل عرصہ سے بیمار چل رہے تھے۔

نئی دہلی/صداٸے وقت /ذراٸع /٣١ اگست ٢٠٢٠۔
==============================
سابق صدر جمہوریہ اور کانگریس کے سینئر رہنما پرنب مکھرجی  کا انتقال ہوگیا ہے۔ وہ دہلی کے آرمی اسپتال میں ایڈمٹ تھے، جہاں ان کی حالت نازک بنی ہوئی تھی۔ پرنب مکھرجی کے بیٹے ابھیجیت مکھرجی نے ٹویٹ کرکے سابق صدر کے انتقال کی تصدیق کی ہے۔ پرنب مکھرجی طویل عرصہ سے بیمار چل رہے تھے اور کورونا سے متاثر پائے گئے تھے۔ 10 اگست کو سابق صدر جمہوریہ پرنب دا نے خود ہی ٹوئٹ کرکے کورونا سے متاثر ہونے کی اطلاع دی تھی۔ 
وہیں دوسری جانب اسپتال کی جانب سے بھی ہیلتھ اپڈیٹ مسلسل جاری کی جارہی تھی۔ پرنب مکھرجی کی حالت نازک ہونے کی خبر آنے کے بعد صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند نے پرنب مکھرجی کی خیریت دریافت کرنے کے لئے ان کی بیٹی شرمشٹھا مکھرجی کو فون کیا تھا۔
پرنب مکھرجی نے جولائی2012 میں ہندوستان کے 13 ویں صدر جمہوریہ کے طور پر حلف لی تھی۔ وہ 25 جولائی 2017 تک اس عہدے 2017 تک اس عہدے پر رہے تھے۔ پرنب مکھرجی کو 26 جنوری 2019 میں بھارت رتن سے سرفراز کیا گیا تھا۔ پرنب مکھرجی نے کولکاتا یونیورسٹی سے تاریخ اور پولیٹیکل سائنس میں پوسٹ گریجویشن کے ساتھ ساتھ قانون کی ڈگری حاصل کی تھی۔ وہ ایک وکیل اور کالج کے استاد بھی رہے اور انہیں اعزازی ڈی لٹ کی ڈگری بھی دی گئی۔ پرنب مکھرجی نے پہلے ایک کالج ٹیچر کے طور پر اور بعد میں بطور صحافی اپنا کیریئر شروع کیا۔ 11 دسمبر 1935، کو مغربی بنگال کے ویر بھوم ضلع میں پرنب مکھرجی پیدا ہوئے تھے۔ ان کے والد 1920 سے ہی کانگریس پارٹی میں سرگرم تھے۔ پرنب مکھرجی کے والد عظیم مجاہد آزادی تھے، جنہوں نے انگریز حکومت کے خلاف تحریک چلانے کی بنا پر 10 سال سے زیادہ تک جیل کی سزا بھی کاٹی تھی۔

Post Top Ad

Your Ad Spot