Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Thursday, September 10, 2020

آر جے ڈی کو بڑا جھٹکا، پارٹی کے سینئر لیڈر رگھونش پرساد سنگھ نے دیا استعفی۔

ڈاکٹر رگھوونش پرساد سنگھ نے جمعرات کو آر جے ڈی صدر لالو پرساد یادو کو خط لکھ کر پارٹی چھوڑنے کی اطلاع دی۔ انہوں نے خط میں کہا ’’عوامی لیڈر کرپوری ٹھاکر کے انتقال کے بعد 32 برسوں تک آپ کے پیچھے کھڑا رہا لیکن اب نہیں۔ پارٹی لیڈر اور عوام نے کافی پیار دیا، مجھے معاف کریں‘‘۔

پٹنہ۔۔۔بہار /صداٸے وقت /ذراٸع / ١٠ ستمبر ٢٠٢٠۔
==============================
 راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کو آج انتخابات سے قبل اس وقت بڑاجھٹکا لگا  جب پارٹی کے نائب صدر رہے سابق مرکزی وزیر ڈاکٹر رگھوونش پرساد سنگھ نے آج پارٹی سے استعفی دے دیا۔ ڈاکٹر رگھوونش پرساد سنگھ نے جمعرات کو دلی کے آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) سے آر جے ڈی صدر لالو پرساد یادو کو خط لکھ کر پارٹی چھوڑنے کی اطلاع دی۔ انہوں نے خط میں کہا ’’عوامی لیڈر کرپوری ٹھاکر کے انتقال کے بعد 32 برسوں تک آپ کے پیچھے کھڑا رہا لیکن اب نہیں۔ پارٹی لیڈر اور عوام نے کافی پیار دیا، مجھے معاف کریں‘‘۔
واضح رہے کہ سابق رکن پارلیمنٹ راما سنگھ کو آر جے ڈی میں لائے جانے کی خبروں کے بعد سے ہی ڈاکٹر رگھوونش پرساد سنگھ ناراض تھے۔ لالو پرساد یادو نے بھی انہیں منانے کو کوشش کی، اسی دوران لالو یادو کے بڑے بیٹے تیج پرتاپ یادو نے ڈاکٹر سنگھ کے بارے میں متنازعہ بیان دے دیا تھا کہ ’ایک لوٹا سمندر سے نکل جائے تو کوئی فرق نہیں پڑتا‘۔ ایسا سمجھا جاتا ہے کہ ڈاکٹر سنگھ کافی ناراض تھے اور بے عزتی محسوس کررہے تھے۔ بالآخر انہوں نے پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ لیا۔ ڈاکٹر سنگھ فی الحال ایمس میں اپنا علاج کرارہے ہیں۔
 رگھوونش پرساد سنگھ نے بتایا کہ تیجسوی یادو نے ایمس میں آ کر میری خیریت دریافت کی جو مجھے اچھا لگا، لیکن ہم نے قومی نائب صدر کے عہدے سے پہلے ہی استعفیٰ دے دیا ہے اور اسے ہرگز واپس نہیں لیں گے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot