Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Monday, January 18, 2021

مغربی بنگال : ممتا بنرجی کا شوبھندو ادھیکاری کے گڑھ نندی گرام سے الیکشن لڑنے کا اعلان۔

ممتابنرجی نے نندی گرام کے ٹکھالی میں ایک بڑے عوامی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نندی گرام میرے دل کے قریب ہے۔ میں اپنا نام بھول سکتی ہوں لیکن نندی گرام کو نہیں بھول سکتی ۔ نندی گرام کے عوام کے ساتھ میری جذباتی وابستگی کو دیکھتے ہوئے آج میں اعلان کر رہی ہوں کہ میں نندی گرام سے آئندہ انتخاب لڑنا چاہتی ہو ں۔
کولکاتا /مغربی بنگال /صداٸے وقت /ذراٸع /١٨ جنوری ٢٠٢١۔
==============================
وزیر اعلی ممتا بنرجی نے آج نندی گرام میں پارٹی چھوڑ کر بی جی پی میں شامل ہونے والے شوبھندو ادھیکاری کو چیلنج کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وہ بھوانی پور کےساتھ نندی گرام سے بھی انتخاب لڑیں گی ۔ 2016میں نندی گرام اسمبلی حلقہ سے ترنمول کانگریس کے ٹکٹ پر شوبھندو ادھیکاری کامیاب ہوئے تھے اور اب وہ بی جے پی میں شامل ہوگئے ہیں ۔
ممتابنرجی نے نندی گرام کے ٹکھالی میں ایک بڑے عوامی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نندی گرام میرے دل کے قریب ہے۔ میں اپنا نام بھول سکتی ہوں لیکن نندی گرام کو نہیں بھول سکتی ۔ نندی گرام کے عوام کے ساتھ میری جذباتی وابستگی کو دیکھتے ہوئے آج میں اعلان کر رہی ہوں کہ میں نندی گرام سے آئندہ انتخاب لڑنا چاہتی ہو ۔
“میں اپنے ریاستی صدر سبرتو بخشی سے درخواست کرتی ہوں کہ 2021 کے ریاستی انتخابات میں نندی گرام سے امیدوار کے طور پر میرے نام پر غور کریں۔ میں اپنی بھوانی پور سیٹ کی طرف توجہ نہیں چھوڑوں گی ۔ میں بھوانی پور کے عوام سے وعدہ کرتی ہوں کہ میں وہاں ایک اچھا امیدوار دوں گی ۔
خیال رہے کہ نندی گرام اور سینگور میں بائیں محاذ کے حصول اراضی کے خلاف تحریک کی وجہ سے ہی ممتا بنرجی نے بائیں محاذ کے 34 سالہ دور اقتدار کا خاتمہ کرتے ہوئے 2011 میں اقتدار میں آئی تھیں ۔ ترنمول کانگریس ایک خاص حکمت عملی کے تحت نندی گرام سے ممتا بنرجی کو اتارکر ریاست کے عوام کو یہ پیغام دینا چاہتی ہے کہ ممتا بنرجی اب بھی عوام کے ساتھ ہیں اور وہ بی جے پی کی سازشوں سے خوفزدہ نہیں ہیں ۔ چوں کہ یہ اس حلقے میں مسلم ووٹرس کی تعداد اچھی خاصی ہے تو ممتا بنرجی کو انتخاب جیتنے میں مشکلات نہیں پیش آئے گی ۔
یہ حلقہ مغربی بنگال کے مشرقی مدنی پور ضلع میں واقع ہے ۔ اس سیٹ پر 2009 میں ترنمول کانگریس نے پہلی مرتبہ کامیابی حاصل کی تھی ۔ فیروزہ بی بی کو ٹکٹ دیا گیا تھا ۔ فیروزہ بی بی 2011 میں بھی یہاں سے کامیاب ہوئیں تھیں ۔ مگر 2016 میں یہاں سے ترنمول کانگریس کے ہی ٹکٹ پر شوبھندو ادھیکاری کامیاب ہوٸے تھے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot