Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Wednesday, April 14, 2021

پوروانچل ‏یونیورسٹی ‏میں ‏ بابا ‏ صاحب ‏ بھیم ‏ راؤ ‏امبیڈ ‏کر ‏کا ‏ منایا ‏ گیا ‏ یوم ‏ پیدائش ‏. ‏

جون پور. اتر پردیش /صدائے وقت /ذرائع /14 اپریل2021. 
+++++++++++++++++++++++++++== 
ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر کی یوم پیدائش کے موقع پر ویر بہادر سنگھ پوروانچل یونیورسٹی کے ذریعہ بھیم راؤ امبیڈکر کی قومی تعمیر میں شراکت عنوان سے ایک ویبنارکا انعقاد کیا گیا۔یونیورسٹی کی وائس چانسلر پروفیسر نرملا ایس موریہ نے اپنے خطاب میں کہا کہ اگر ہم اپنے فرائض ایمانداری سے ادا کریں گے تو اچھی قوم کی تعمیر ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ غریبوں کے بنیادی حقوق کا تحفظ ہونا ضروری ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے باباصاحب بھیم راؤ امبیڈکر کی شراکت پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔
اپنے صدارتی خطاب میں ٹی ڈی کالج کے سابق پرنسپل ڈاکٹر ارون کمار سنگھ نے کہا کہ کتابوں کے علم سے قوم تشکیل پاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انسان کے رنگ پر پہلے کوئی مسئلہ نہیں تھا، سیاسی جماعتوں نے اپنے ذاتی مفادات کی وجہ سے رنگ کا معاملہ بنا دیا۔ ویبینار میں الہ آباد یونیورسٹی کے شعبہ قانون کے  ڈاکٹر ہریونش سنگھ نے ہم عوام کے ہندوستان کے تصور کے بارے میں بات کی۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم ایک تحریک ہے اور تعلیم کا ایک مقصد ہونا چاہئے جو انسانی زندگی کو حل کرے۔ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ آئین کتنا ہی اچھا ہے، اگر اسے چلانے والا شخص اچھا نہیں ہے تو یہ سراسر بیکار ہوگا۔ لہذا جو لوگ آئین کو چلاتے ہیں انہیں اچھابنناہوگا۔ اسسٹنٹ رجسٹرار ببیتا نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم کا مساوی حق ہونا چاہئے۔ اس موقع پر پروفیسر بی بی تیواری، پروفیسر مانس پانڈے، پروفیسر اجے دیویدی، ڈاکٹر پردیپ کمار، ڈاکٹر منوج مشرا، ڈاکٹر گردھار مشرا، ڈاکٹر راج کمار، ڈاکٹر سوربھ پال، ڈاکٹر رجنیش بھاسکر، ڈاکٹر پونیت دھون، ڈاکٹر راجیو کمار، ڈاکٹر الوک داس سمیت دیگر اساتذہ موجود رہے. 
اسی سلسلے میں سماج وادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو کی ہدایت پر آئین کے معمار باباصاحب ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر کی 130 ویں یوم پیدائش پارٹی کے ضلع صدر لال بہادر یادو کی قیادت میں منائی گئی۔ اس دوران سماجوادی کارکنوں نے بابا صاحب کی آفس، گھر، عوامی مقام یا ڈاکٹر امبیڈکر کے مجسمے پرگلپوشی کر ملک میں آئین کی تعمیر کے ذریعے ان کی شراکت پر روشنی ڈالی. 
پارٹی دفتر پر منعقد سیمنار کو خطاب کرتے ہوئے لال بہادر یادو نے کہا کہ بی جے پی کے سیاسی دور میں وہ آئین خطرے میں ہے، جس کی وجہ سے باباصاحب نے آزاد ہندوستان کو نئی روشنی دی تھی۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ بی جے پی حکومت قرارداد کی شکل میں آئین اور جمہوریت کے اداروں کو کمزور کرنے میں ذرا بھی ہچکچاہٹ محسوس نہیں کی۔ آئین میں بیان کردہ بھروشہ،مذہب، عبادت اور اظہار رائے کی آزادی سے عدم رواداری غیر موثر رہی ہے۔ معاشرتی، معاشی اور سیاسی انصاف کے تصور کو ختم کردیا گیا ہے۔انھوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت آئین کو نظر انداز کرتے ہوئے ریزرویشن کو ختم کرنے کی کوشش کر رہی ہے جو باباصاحب نے آئین میں وقار اور مواقع کی مساوات کو دی تھی۔ نفرت اور معاشرے کی سیاست چلا کر بی جے پی نے پورے معاشرے میں زہر بھر دیا ہے۔ اس موقع پر میوالال گوتم، سمن یادو، انوار الحق، لال محمد راعینی، ڈاکٹر شبنم ناز، رشی یادو، دھرمیندر سونکر، حولدار گوتم، صاحب لال گوتم، ہریش چند پربھاکر سمیت دیگر لوگ موجود رہے۔پروگرام کی نظامت ضلع جنرل سکریٹری ہسام الدین شاہ نے کیا۔

Post Top Ad

Your Ad Spot