Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Wednesday, May 12, 2021

اسرائیل اور حماس کی لڑائی جاری، 65 فلسطینی اور 6 اسرائیلی ہلاک،

نئی دہلی.. /صدائے وقت /ذرائع /13 مئی 2021. 
============================= 
فلسطین کی مزاحمتی تنظیم حماس اور اسرائیل کے درمیان بدھ کو مسلسل تیسرے روز بھی لڑائی جاری رہی اور تازہ ترین اطلاعات کے مطابق اس لڑائی کے نتیجے میں اب تک کم از کم 65 فلسطینی اور 6 اسرائیلی شہری ہلاک ہو گئے ہیں۔ 
خبر رساں ادارے ‘رائٹرز’ کے مطابق اسرائیل نے بدھ کی علی الصباح حماس کے زیرِ کنٹرول علاقے غزہ پر سیکڑوں فضائی حملے کیے جب کہ حماس نے بھی اسرائیل کے شہروں تل ابیب اور بیئر شیبہ پر متعدد راکٹ فائر کیے۔
اسرائیلی وزیر اعظم بینجامن نیتن یاہو نے کہا ہے کہ شدت پسند گروپ کی جانب سے راکٹ حملوں کے جواب میں کی گئی اسرائیلی کارروائی میں غزہ شہر کے برگیڈ کمانڈر کےعلاوہ شدت پسند فلسطینی گروپ سے تعلق رکھنے والے 15 دیگر ارکان ہلاک ہوئے ہیں۔ 
انھوں نے کہا کہ ”یہ محض ابتدا ہے۔ ہم انھیں ایسا جواب دیں گے کہ وہ بھول نہیں پائیں گے”۔
اسرائیل کی فوج کے مطابق اس نے حماس کے راکٹ لانچنگ پیڈز، دفاتر اور تنظیم کے رہنماؤں کے گھروں کو بھی نشانہ بنایا ہے۔
اسرائیل کی بمباری کے نتیجے میں غزہ میں موجود ایک کثیر المنزلہ رہائشی عمارت زمین بوس ہو گئی جب کہ دوسری عمارت کو شدید نقصان پہنچا ہے۔
فلسطینی وزارت صحت کے ایک اعلان کے مطابق، غزہ کی پٹی میں جاری کشیدگی کےباعث پیر کے روز سے اب تک کم از کم 65 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ طبی امداد سے وابستہ اہلکاروں نے بتایا ہے کہ اسرائیل میں چھ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔
دوسری جانب حماس نے کہا ہے کہ اس نے غزہ شہر میں رہائشی عمارت کو نشانہ بنانے کے جواب میں تل ابیب اور بیئر شیبہ کی جانب 210 راکٹ فائر کیے ہیں۔
​غزہ میں اسرائیل کی فضائی کارروائیوں اور مسجد اقصیٰ میں پولیس اور فلسطینیوں کے درمیان جھڑپوں کے بعد اسرائیلی شہر لد میں آباد عرب اقلیت میں تشویش پائی جاتی ہے۔
لد کے مختلف مقامات پر پرتشدد مظاہروں کے دوران یہودی عبادت گاہوں کو نقصان پہنچانے کے واقعات رپورٹ ہونے پر اسرائیلی وزیرِ اعظم بن یامین نیتن یاہو نے شہر میں ہنگامی حالت نافذ کر دی ہے۔ لد شہر میں یہودیوں کے علاوہ عرب باشندوں کی بھی بڑی تعداد آباد ہے۔ پولیس نے منگل کی شب لد، ام الفہم سمیت کئی عرب اکثریتی علاقوں سے درجنوں افراد کو حراست میں بھی لیا ہے۔
یاد رہے کہ اسرائیل اور حماس کے درمیان 2014 کی جنگ کے بعد حالیہ لڑائی کو ہلاکت خیز قرار دیا جا رہا ہے جس نے بین الاقوامی سطح پر اس تشویش کو جنم دیا ہے کہ یہ لڑائی قابو سے باہر ہو سکتی ہے۔
اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل نے اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان حالیہ کشیدگی کے خاتمے کے لیے بدھ کو ہنگامی اجلاس بلانے کی منصوبہ بندی کی ہے۔
‘اے پی’ کے مطابق کونسل کے رکن ملک کے ایک سفارت کار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ امریکہ کے خدشات کے پیشِ نظر سلامتی کونسل نے غزہ کی صورتِ حال پر بیان جاری نہیں کیا۔
اقوامِ متحدہ کے مشرقِ وسطیٰ کے لیے سفیر برائے امن ٹور وینس لینڈ نے فوری طور پر لڑائی کے خاتمے کی اپیل کی ہے اور کہا ہے کہ تمام فریق قیادت کو ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے کشیدگی کا خاتمہ کرنا چاہیے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot