Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Thursday, May 6, 2021

سپریم کورٹ کی مرکز کو ہدایت: تیسری لہر کیلئے تیاری کیجئے، پورے ہندوستان میں آکسیجن مہیا کرانے کی سخت ضرورت. ‏

جسٹس ڈی وائی چندرچود  نے مرکز کو بتایا کہ ’’اگر ہم آج سے ہی تیاری کرتے ہیں تو ہم تیسری لہر کو سنبھال لیں گے۔ اس کے لیے ایک ملک گیر سطح پر آکسیجن کی فراہمی کے لیے بفر اسٹاک بنانے کی ضرورت ہے‘‘۔
نئی دہلی /صدائے وقت /ذرائع /6 مئی 2021 
==============================
جمعرات کے روز دہلی میں آکسیجن کی فراہمی سے متعلق کیس کی سماعت کرتے ہوئے سپریم کورٹ  نے مرکز سے ملک بھر میں آکسیجن کی تقسیم کے لئے اپنے فارمولے کو ازسر نو تشکیل دینے کو کہا ہے۔ عدالت نے تجویز پیش کی کہ مرکز کل ہند سطح پر اپنے منصوبہ کو اپنائے تاکہ وہ کورونا وائرس کی تیسری لہر کی تیاری کر سکیں۔
اس نے مرکز سے آکسیجن آڈٹ کو دیکھنے اور مختص کرنے کی بنیاد کا جائزہ لینے کے لئے کہا کیونکہ وبا کی تیسری لہر، دوسری لہر سے مختلف ہوگی۔ جسٹس ڈی وائی چندرچود  نے مرکز کو بتایا کہ ’’اگر ہم آج سے ہی تیاری کرتے ہیں تو ہم تیسری لہر کو سنبھال لیں گے۔ اس کے لیے ایک ملک گیر سطح پر آکسیجن کی فراہمی کے لیے بفر اسٹاک بنانے کی ضرورت ہے‘‘۔
آکسیجن کے جاری بحران کے درمیان سپریم کورٹ نے مرکز کے منصوبے کے بارے میں سنوائی کی کہ وہ دہلی میں کورونا مریضوں کے لئے روزانہ 700 میگا ٹن تک میڈیکل آکسیجن کی فراہمی میں کس طرح اضافہ کرسکتا ہے۔ مرکز نے اعلی عدالت کو آگاہ کیا کہ اس نے اپنے حکم کی تعمیل کی ہے اور 700 میگا ٹن آکسیجن کے بجائے اس نے دہلی کو730 میگا ٹن کی فراہمی یقینی بنائی ہے۔
یہ بھی کہا گیا ہے کہ ایک سروے سے انکشاف ہوا ہے کہ دہلی کے ہسپتالوں میں آکسیجن کا نمایاں ذخیرہ موجود ہے۔ مرکزی حکومت کی نمائندگی کرنے والے سالیسیٹر جنرل توشار مہتا نے کہا کہ دہلی کو بڑی مقدار میں آکسیجن کی فراہمی کی گئی ہے لیکن قومی دارالحکومت میں ان لوڈنگ میں وقت لگ رہا ہے۔

Post Top Ad

Your Ad Spot