Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Friday, July 2, 2021

آج کی اہم خبریں*

              صدائے وقت /ذرائع/ 2جولاؠی 2021۔
====================================
*عام آدمی کی جیب پر پھر مہنگائی کی مار،دودھ کے بعد گھریلو گیس کی قیمتوں میں اضافہ*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق عام آدمی کے جیپ پر مہنگائی کی ایک اور مار پڑی ہے۔ کل گھریلو گیس کی قیمتوں میں 25 روپئے کا اضافہ ہوا ہے۔پچھلے چھ مہینے میں ایک سو چالیس روپئے بڑھایا جاچکا ہے۔ایل پی جی کی آسمان چھوتی قیمت سے عام آدمی پریشان ہے۔غیر سبسڈی والے سیلنڈر کی نئی قیمت کل سے لاگو ہورہی ہے۔اب آٹھ سو پچاس روپئے ایک سلینڈر کے لئے ادا کرنے ہونگے ۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*ون نیشن ون راشن کارڈ سے ملک کے کروڑوں کارکنان کو ہوا فائدہ: وزیر اعظم نریندر مودی*
واضح ہوکہ وزیر اعظم نریندر مودی نے کل ڈیجیٹل انڈیا کے 6 سال مکمل ہونے کے موقع پر اس مہم سے مستفید ہونے والوں کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے بات کی۔  انہوں نے کہا کہ تعلیم کو ڈیجیٹل بنانا وقت کی ضرورت ہے۔  کورونا وبائی امراض نے اس عمل کو تیز کردیا ہے۔  اب ہماری کوشش ہے کہ گاؤں میں سستی اور اچھی انٹرنیٹ کنکٹیویٹی حاصل ہو۔  سستے موبائل اور دوسرے  مادھیم دستیاب ہوں تاکہ غریب ترین بچے بھی اچھی طرح تعلیم حاصل کرسکیں۔  اسی کے ساتھ ہی ملک بھر کے کسانوں نے انعام پلیٹ فارم پر اعتماد بڑھا ہے۔  ENAM اس سوچ کے ساتھ تشکیل دیا گیا ہے کہ کسانوں کو ملک کی منڈیوں میں اچھے سودے مل سکتے ہیں اور انہیں اپنی پیداوار کی بہترین قیمت مل سکتی ہے۔ وزیر اعظم نے یہ بھی کہا کہ "ون نیشن ون راشن کارڈ" کی سہولت ملک کے کروڑوں کارکنوں کے لئے ایک بڑی سہولت کے طور پر ابھری ہے۔  شہر میں کام کرنے والے مزدور "ون نیشن ون راشن کارڈ" کی مدد سے شہروں میں راشن اٹھا رہے ہیں اور ان کا کنبہ دیہاتوں میں باقی اناج کا کوٹہ اٹھا رہا ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*عدلیہ کے لیے الگ بجٹ مختص کرنے کی درخواست مسترد*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق سپریم کورٹ نے عدلیہ کے لیے الگ بجٹ مختص کرنے کی درخواست کو مسترد کردیا۔ اس معاملے کی سماعت کرتے ہوئے چیف جسٹس آف انڈیااین وی رمنا نے کہا کہ ہم حکومت کو پیسوں کی تقسیم کے حوالے سے کوئی حکم نہیں دے سکتے۔ سپریم کورٹ نے یہ تبصرہ ایڈوکیٹ دیپک کنسل کی درخواست پر مداخلت سے انکار کرتے ہوئے کیا ہے۔ درخواست میں کہا گیا تھا کہ حکومت ہند کے عدلیہ کو دیے گئے فنڈزناکافی ہیں۔ درخواست کے مطابق حکومت ہند زیادہ تر معاملات میں فریق ہے ، ایسی صورتحال میں غیر جانبداری پر سوال اٹھنالازمی ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*بی جے پی میں اندرونی لڑائی،2022 میں عوام کی حکومت بننے جارہی ہے: اکھلیش یادو*
واضح ہو کہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق اتر پردیش میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے حوالے سے سماج وادی پارٹی کے سربراہ اور سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو نے ایک بڑا بیان دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ 2022 میں عوام کی حکومت بننے جارہی ہے۔  بھارتیہ جنتا پارٹی معاملات پر بحث کرنے سے خوفزدہ ہے۔  بی جے پی کے کیمپ کے اندر جنگ جاری ہے۔  دوسروں کے گھروں میں دیکھنے والوں کے گھر میں لڑائی جھگڑے ہو رہے ہیں۔  وہ عوام کا سامنا نہیں کرسکتے ، لہذا وہ جان بوجھ کر گھر کا جھگڑا دکھا رہے ہیں۔ اپوزیشن کو نشانہ بناتے ہوئے اکھلیش یادو نے کہا ، 'آخر بی جے پی کب اپنے وعدوں پر نظر ثانی کرے گی؟  جب دہلی اور لکھنؤ میں حکومت ہے تو نوکری۔روزگار کا جائزہ کیوں نہیں لیا جارہا ہے؟ کوویڈ ۔19 کا جائزہ کیوں نہیں لیا جارہا ہے؟  معیشت کا جائزہ کیوں نہیں لیا جارہا ہے؟  کسانوں کے معاملے پر نظر ثانی کیوں نہیں کی جارہی ہے؟  کئے گئے سرمایہ کاری کے وعدوں کا کیا ہوا؟گنگا کو صاف کرنے کے وعدے پر نظر ثانی کیوں نہیں کی جارہی ہے؟
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*بے شرمی سے سیاست کررہے ہیں ،وزیر صحت ڈاکٹر ہرش وردھن نے کسی کا نام لئے بغیر بنایا نشانہ*
واضح ہو کہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق مرکزی حکومت کی کاوشوں کی وجہ سے ملک میں کورونا ویکسینیشن مہم نے زور پکڑ لیا ہے ۔ مرکزی وزیر صحت ڈاکٹر ہرش وردھن نے یہ دعوی کرتے ہوئے جمعرات کے روز سلسلہ وار ٹویٹس کرکے ناقدین پر تنقید کی۔  کسی پارٹی یا رہنما کا نام لئے بغیر انہوں نے کہا کہ ریاستی قائدین خوف و ہراس پیدا کرنے میں نہیں بلکہ منصوبہ بندی میں زیادہ سے زیادہ توانائی خرچ کریں۔  وزارت صحت کی جانب سے کہا گیا تھا کہ یوم یوگا کے موقع پر ویکسینیشن کی نئی پالیسی 21 جون سے نافذ کی گئی ہے۔  مرکزی حکومت نے ریاستوں کو ویکسینیشن پر مکمل کنٹرول کرتے ہوئے مفت خوراکیں دینا شروع کردی ہیں۔  اس ہفتے میں ، ملک بھر میں تین کروڑ سے زیادہ افراد کو ویکسین کی خوراک دی گئی۔ وزارت نے اسے سنگ میل قرار دیا ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*ممبئی کو نقصان نہیں پہنچا سکتی کورونا کی تیسری لہر، ملک کی نامور  ٹاٹا انسٹی ٹیوٹ آف فنڈمنٹل ریسرچ (ٹی آئی ایف آر) کے سائنس دانوں کا دعویٰ*
واضح ہو کہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق اس سال  یکم جون تک  ممبئی شہر کے 80 فیصد لوگ کورونا وائرس کی چپیٹ میں آکر ٹھیک ہوئے ہیں۔  ایسی صورتحال میں ممبئی میں کورونا وائرس کی تیسری لہر کی ممکنہ حد تک پہنچنے کا امکان بہت کم ہے۔  بنیادی تحقیق کرنے والے ملک کی نامور ریسرچ انسٹی ٹیوٹ ، ٹاٹا انسٹی ٹیوٹ آف فنڈمنٹل ریسرچ (ٹی آئی ایف آر) کے سائنس دانوں نے اپنی رپورٹ میں اس امکان کا اظہار کیا ہے۔انفیکشن کے اعداد و شمار اور اب تک کئے گئے سیررو سروے کی رپورٹ کی بنیاد پر ٹی آئی ایف آر کی اس تجزیہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں سال یکم جون تک ممبئی میں 80٪ لوگ کورونا کی وجہ سے ٹھیک ہوچکے ہیں۔  ان میں سے 90٪ کچی آبادیوں سے اور 70٪ عمارتوں سے تعلق رکھتے ہیں ٹی آئی ایف آر کی مطالعاتی رپورٹ میں کہا گیا ہے   اگر تیسری لہر آئے گی تو ، یہ دوسری لہر سے زیادہ خطرناک نہیں ہوگی۔اس رپورٹ کے مطابق ، وہ لوگ جو پہلے ویب میں متاثر ہوئے تھے وہ اینٹی باڈیز کی سطح کم ہونے کی وجہ سے دوبارہ انفیکشن کا شکار ہوسکتے ہیں ، لیکن اس کا انحصار مختلف حالتوں میں اور اس کی کارکردگی یا تاثیر کے ساتھ ساتھ ویکسین کی رفتار پر بھی ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*شہریت ترمیمی قانون کے خلاف معاملے میں جیل بھیجے گئے آسام کے نیتا اکھل گوگوئ دو سال بعد رہا*
واضح ہو کہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق سماجی کارکن اور آسام سے تعلق رکھنے والے ایم ایل اے اکھل گوگوئی کو جمعرات کے روز دوسرے UAPA معاملے میں این آئی اے کی خصوصی عدالت نے بری کردیا ، جس کے بعد وہ دو سال بعد جیل سے باہر آگۓ۔ اہم بات یہ ہے کہ گوگوئی نے شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کی مخالفت کی تھی۔ پھر ان پر ملک بغاوت اور تشدد کو بھڑکانے کا الزام لگایا گیا۔ اس سال ریاست میں ہونے والے اسمبلی انتخابات میں رائےجور دل کے سربراہ اور آر ٹی آئی کارکن اکھل گوگوئی نے سیواساگر سیٹ پر کامیابی حاصل کی ہے۔انہوں نے بی جے پی کی امیدوار سورابھی راجکونور اور کانگریس کی شبھرمتر گوگوئی کو شکست دی ہے
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*ٹکٹ کے لیے سیاست میں داخل نہیں ہوا، خدمت کا موقع چاہتاتھا:گپتیشور پانڈے*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق بہار کے سابق ڈائریکٹر جنرل آف پولیس (ڈی جی پی) اور بہار انتخابات سے عین قبل جنتا دل یونائیٹڈ (جے ڈی یو) سے وابستہ ہونے والے گپتیشور پانڈے نے کہاہے کہ میں سیاست میں داخل ہونا چاہتا تھا۔ یہ بھی سچ ہے کہ مجھے ٹکٹ نہیں ملا لیکن میں نہیں چاہتا تھا کہ اسمبلی کا ٹکٹ لے کرایم ایل اے بن جائوں۔ کوئی بھی ڈی جی پی اسمبلی ٹکٹ کے لیے دستبردار نہیں ہوگا۔ میں نے 35 سال خدمت کی اور میرے سخت ترین نقاد بھی نہیں کہہ سکتے کہ میں ناکام رہا۔پانڈے نے کہاہے کہ میں سماج کے لیے کام کرنا چاہتا تھا۔ میں یہ موقع چاہتا تھا۔ میں یہ واضح کرنا چاہتا ہوں کہ تمام فیصلے میرے ہی تھے۔ یہاں تک کہ ملازمت چھوڑنا ، ٹکٹ نہ ملنا میرا مقدر ہے۔ ہمارے بھی کئی قسم کے دشمن ہیں۔ ہم ہیں جو ہم ہیں۔سیاست میں میری کوئی خواہش نہیں ، میں نے خود کو بھگوان کے حوالے کردیا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنی گریجویشن سنسکرت میں کی تھی۔ میں نے یہ سب پڑھا ہے ، مجھے بچپن سے ہی ویدوں اور پورانوں میں بھی دلچسپی تھی۔ میں بابا نہیں بننا چاہتا اور نہ ہی کسی کو شاگرد بنانا چاہتا ہوں۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*دہلی ، یوپی ، ایم پی ، پنجاب ، ہریانہ اور شمالی راجستھان میں آئندہ دو دن شدید گرمی کی لہر کا انتباہ*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق اگلے دو دن شمالی اور شمال مغربی ریاستوں کے لئے مزید پریشان کن بننے جارہے ہیں ،محکمہ موسمیات نے متنبہ کیا ہے کہ اگلے دو دن میں دہلی ، اترپردیش ، مدھیہ پردیش ، پنجاب ، ہریانہ اور شمالی راجستھان میں اگلے دو دن شدید لو چل سکتی ہے ،محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ پاکستان اور شمال مغربی ہندوستان سے چلنے والی گرمی سے چلنے والی تیز ہواؤں کی وجہ سے ان علاقوں میں شدید گرمی کی لہر کے حالات پیدا ہوسکتے ہیں۔آئیے واضح رہے کہ ان ریاستوں میں گرمی کی شدید صورتحال ہے ، جس کی وجہ سے مانسون کی آمد میں بھی تاخیر ہورہی ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*تبدیل مذہب معاملے میں گرفتار عرفان خواجہ کا مقدمہ جمعیۃ علما لڑے گی*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق مذہب تبدیل کرانے کے الزام میں یو پی اے ٹی ایس نے مزید تین ملزمین کو گرفتار کیا ہے، جن میں سے ایک کا تعلق مہاراشٹر کے بیڑ ضلع سے ہے۔ یو پی اے ٹی ایس نے ملزم عرفان خواجہ خان جو منسٹری آف ومن اینڈ چلڈرن ڈیولپمنٹ میں بطور ترجمان کام کرتے تھے کو گرفتار کیا ہے جن پر الزام ہے کہ وہ گونگے بچوں کو عمر گوتم کے کہنے پر اسلام قبول کرنے میں ان کی مدد کرتے تھے حالانکہ ملزم کے اہل خانہ نے اے ٹی ایس کے اس دعوی کو جھوٹا قراردیا ہے۔ ملزم عرفان خواجہ خان کی گرفتاری کے بعد اس کے اہل خانہ نے صدر جمعیۃ علماء بیڑ حافظ ذاکر اور مولانا شیخ معین قاسمی (صدر جمعیۃ علماء شاخ سرسالہ) کے توسط سے جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) قانونی امداد کمیٹی کے سربراہ گلزار اعظمی سے رابطہ قائم کرکے انہیں قانونی امداد دیے جانے کی درخواست کی ہے
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*گلشن کمارقتل کیس: بامبے ہائی کورٹ نےمجرم عبدالرؤف عرف داؤدمرچنٹ کی سزائے عمرقیدکورکھابرقرار*
 واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق گلشن کمار قتل کیس سے منسلک  درخواست پر بامبے ہائی کورٹ نے  اپنا فیصلہ سنایا ہے۔ کورٹ نے قتل کے مجرم عبدالرؤف عرف داؤد مرچنٹ کی عمر قید کی سزا کو برقرار رکھا۔بامبے ہائی کورٹ نے ٹی سیریز کے مالک گلشن کمار قتل کیس میں  عبدالرؤف عرف داؤد مرچنٹ کو قصور وار قراردیتے ہوئے عمرقید کی سزا کو برقرار رکھا۔ اس کے علاوہ ہائی کورٹ نے دوسرے ملزم عبد الرشید کو بھی مجرم قرار دیا ہے جسے پہلے سیشن کورٹ نے بری کردیا تھا۔مہاراشٹر سرکار نے عبدالرشید کو بری کرنے کے فیصلے کو  ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا۔ عبدالرشید کوعمر قید کی سزا سنائی گئی تھی۔جبکہ  کورٹ  نے اس معاملہ میں مہاراشٹرا حکومت کی اپیل کو مسترد کرتے ہوئے  رمیش تورانی کو بری کرنے کے فیصلے کو برقرار رکھا۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*یورپی یونین کے سات ممالک اور سوئٹزرلینڈ نے کوویشیلڈ کو منظوری دے دی ہے*
واضح ہو کہ وہ لوگ جو یورپ جانا چاہتے ہیں ان کے لئے ایک بہت بڑا مسئلہ ختم ہوگیا ہے سوئٹزرلینڈ نے سات یورپی یونین کے ممالک آسٹریا  جرمنی سلووینیا  یونان آئس لینڈ آئرلینڈ اور اسپین کے ساتھ مل کر ہندوستان کے کوشیلڈ کو تسلیم کیا ہے  یہ منظوری سفر کے لئے بہت اہم تھی اس وقت کسی بھی ملک کے سفر کے لئے ویکسین کا پاسپورٹ بہت ضروری ہے
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*دیویندر فڑنویس کے خط پر گورنر نے ادھو ٹھاکرے سے پوچھا ، این سی پی رہنما نے کہا ہمیں سبق نہ سکھائیں*
واضح ہو کہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق مہاراشٹرا کے گورنر بھگت سنگھ کوشیاری نے سابق وزیر اعلی اور اپوزیشن لیڈر دیویندر فڑنویس کے خط کی بنیاد پر ریاستی وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے کو ایک خط لکھا ہے اور کہا ہے کہ وہ راج بھون کو یہ اطلاع دینا ہے کہ فڑنویس کی 23 جون کے خط میں اٹھائے گئے تین امور پر کیا ہوا ہے بی جے پی رہنما دیویندر فڑنویس نے اپنے خط میں 3 مطالبات کیے تھے  پہلا یہ کہ ودھان منڈل کا اجلاس طویل عرصہ تک جاری رہے، دوسرا اسپیکر کے عہدے کو جلد سے جلد پُر کرنے کے لئے کارروائی کی جانی چاہئے اور تیسرا یہ کہ جب تک ریاست میں او بی سی ریزرویشن کا معاملہ معلق نہیں ہوتا اس وقت تک مقامی سوراج انتخابات نہیں کروائے جائیں گورنر نے وزیر اعلی کو ایک خط لکھا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ تینوں امور اہم ہیں اور ان پر مناسب اقدامات اٹھائیں اور انہیں آگاہ کریں گورنر کے اس خط پر مہا وکاس اگھاڑی حکومت میں کیبنیٹ وزیر نواب ملک نے شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ راج بھون ایک سیاسی اڈہ بن گیا ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*سماج وادی پارٹی کے سربراہ ملائم سنگھ یادو اسپتال میں بھرتی*
واضح ہو کہ سماج وادی پارٹی کے بانی ملائم سنگھ یادو کو بدھ کی سہ پہر کو گروگرام کے میدانتا اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ہسپتال کی طرف سے ابھی تک کوئی بیان یا میڈیکل بلیٹن جاری نہیں کیا گیا ہے لیکن خیال کیا جاتا ہے کہ 81 سالہ تجربہ کار سیاستدان عمر سے متعلق صحت سے متعلق مسائل کا علاج کر رہے ہیں  یوپی کے مضبوط رہنما ملائم سنگھ تین بار ریاست کے وزیر اعلی کے عہدے پر فائز رہے ہیں وہ 1 جون 1996 سے 19 مارچ 1998 تک ملک کے وزیر دفاع کے عہدے پر بھی رہ چکے ہیں
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*مغربی بنگال میں انتخابات کے بعد ہونے والے تشدد کو لیکر مرکز، ریاستی حکومت اور الیکشن کمیشن کو سپریم کورٹ کا نوٹس*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق سپریم کورٹ نے مغربی بنگال میں انتخابات کے بعد ہونے والے تشدد پر ایس آئی ٹی سے تحقیقات کی درخواست پر مرکزی حکومت، مغربی بنگال حکومت اور الیکشن کمیشن کو نوٹس جاری کیا ہے۔ دراصل رنجنا اگنیہوتری اور ایک نے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کر مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات کے بعد 2 مئی سے شروع ہونے والے سیاسی تشدد کی ایس آئی ٹی سے عدالتی نگرانی کی تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا ہے۔  درخواست میں تمام متاثرین کو معاوضہ دینے کا حکم جاری کرنے کا مطالبہ بھی کیا گیا ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*غازی پور بارڈر پر کسانوں اور بی جے پی قائدین کے درمیان جھڑپ، 200 نامعلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق غازی پور بارڈر پر کسانوں اور بی جے پی قائدین کے درمیان بدھ کے روز جھڑپ ہو گئی تھی۔  اسے لیکر 200 نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ یہ کسانوں اور بی جے پی قائدین کے مابین حملہ کے معاملے میں درج کیا گیا ہے۔ معلومات کے مطابق بی جے پی کے کچھ رہنما کارکن امت پردھان نامی پارٹی تنظیم سے وابستہ قائد کے استقبال کے لئے غازی پور بارڈر پہنچے تھے، اس دوران ہنگامہ آرائی اور مظاہرہ ہوا تھا۔  احتجاج کرنے والے کسانوں نے ہنگامہ آرائی اور پتھراؤ شروع کردیا، سیاہ جھنڈے بھی دکھائے۔  موقع پر موجود پولیس نے کسی طرح بی جے پی رہنما کی گاڑی کو وہاں سے وہاں سے نکلوایا۔  واقعے کے بعد بی جے پی کارکنان بڑی تعداد میں غازی آباد ایس ایس پی آفس پہنچے اور ملزمان کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔  ان کا کہنا ہے کہ کسانوں نے غازی پور بارڈر پر بی جے پی کارکنوں کی بہت سی گاڑیوں کی توڑ پھوڑ کی ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*کاشی وشوناتھ مندر سے متصل گیانواپی مسجد میں محکمہ آثار قدیمہ کی تحقیقات کے خلاف درخواست* 
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق سنی وقف بورڈ نے وارانسی کی ضلعی عدالت میں نظرثانی کی درخواست دائر کردی ہے۔  یہ درخواست 9 اپریل کو گیانواپی مسجد کے حوالے سے فاسٹ ٹریک عدالت کے حکم پر ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ گیانواپی مسجد کو محکمہ آثار قدیمہ سے تفتیش کرنی چاہئے تاکہ معلوم ہو کہ وہاں کوئی مندر تھا یا نہیں اور عبادت کی گئی تھی یا نہیں۔  نظرثانی درخواست میں سنی وقف بورڈ نے ضلعی عدالت کے سامنے یہ نکتہ پیش کیا ہے کہ مذکورہ عدالت کو یہ فیصلہ دینے کا حق نہیں ہے اور یہ 1991 کے ایکٹ کے تحت نہیں آتا ہے ، لہذا اسے دوبارہ سننے سے روکا جاسکتا ہے۔ ضلعی عدالت نے اس نظرثانی درخواست کی تاریخ 9 جولائی مقرر کی ہے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*صدرجمہوریہ ، نائب صدر جمہوریہ نے طبی برادری کی بے لوث خدمات کی تعریف کی*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق جمعرات کے روز صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند اور نائب صدرجمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو نے یوم ڈاکٹر کے موقع پر طبی برادری کی بے لوث خدمات کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ وبائی مرض نے ہمارے ڈاکٹروں اور ان کے اہل خانہ پر زبردست دباؤ ڈالا ہے۔ آئیے ہم سب کوویڈ کی مناسب ہدایات پر عمل کریں اور طبی برادری پر دباؤ کم کریں۔صدر کووند نے کہا ، “آئیے قومی معالج ڈاکٹروں کی لگن کے دن کے طور پر منائیں ، تاکہ وہ اپنی صلاحیت کے مطابق بیماروں کا علاج کر سکیں۔ ہم ان کی بے لوث خدمات کا مقروض ہیں جنہوں نے اپنی جان کو خطرے میں ڈال دیا۔ ہمیں بچانے کے لئے۔ نائب صدر نائیڈو نے ٹویٹ کیا ، ” آج اس یوم ڈاکٹر کے دن ، نامور سماجی کارکن اور مغربی بنگال کے سابق وزیر اعلی ، مرحوم ڈاکٹر ودھان چندرا رائے کی یوم پیدائش کے موقع پر ، ہم انہیں یوم ڈاکٹر کے طور پر یاد کرتے ہیں
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*جولائی ماہ میں 15دن بند رہیں گے بینک*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق ملک بھر کے بینکوں تعطیلات کی وجہ سے جولائی 2021 میں کل پندرہ دن بند رہیں گے۔ ان میں تہوار سے متعلق نو تعطیلات کے علاوہ دوسرا ، چوتھا ہفتہ اور اتوار شامل ہے۔ ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) کی جانب سے تعطیلات کی فہرست کے مطابق تمام نو تعطیلات مختلف مواقع کے لئے مخصوص تعطیلات ہیں۔ لہذا اگر آپ کے پاس جولائی میں بینک سے متعلق اہم کام ہیں، تو یہ کیلنڈر آپ کی منصوبہ بندی میں کام آئے گا۔تمام بینک عام تعطیلات پر بند رہتے ہیں جبکہ مخصوص تعطیلات ایک ریاست سے دوسری ریاست میں مختلف ہوتی ہیں۔ پورے ملک میں بینکوں کے ذریعہ صرف گزٹ چھٹیاں منائی جاتی ہیں۔بھونیشور کے اس پار بینک 12 جولائی کو رتھ یاترا کی وجہ سے تعطیل منائیں گے۔ کانگ (رتھاجاترا) کے سبب امپھال میں بھی 12 جولائی کو بینک بند رہیں گے۔ وہیں 13 اور 14 جولائی کو سکم کے بینک بھنو جینتی اور ڈروکپا شیشی کو دیکھنے کے لئے بند رہیں گے۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*7 ہفتوں بعدکشمیر میں ٹرین سروس بحال،بڈگام۔ بانہال ریل خدمات شروع*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام سے جموں کے بانہال تک چلنے والی ریل سروس جمعرات کو قریب سات ہفتوں کے بعد جزوی طور بحال کر دی گئی ہے۔تاہم بڈگام سے شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ تک چلنے والی ریل سروس ہنوز معطل ہے۔بتا دیں کہ جموں و کشمیر انتظامیہ نے کورونا کی دوسری لہر میں تیزی کے ساتھ ہی 10 مئی کو وادی کشمیر میں ٹرین سروس معطل کر دی تھی۔ایک ریلوے عہدیدار نے یو این آئی کو بتایا کہ بڈگام – بانہال ریل سروس جمعرات کو جزوی طور بحال کر دی گئی تاہم صرف پچاس فیصد مسافروں کو ہی ٹرین میں سفر کرنے کی اجازت ہوگی۔انہوں نے کہا کہ اس ٹریک پر دن میں صرف چار ریل گاڑیاں چلیں گی جن میں دو صبح کے وقت اور دو شام کے وقت چلیں گی۔موصوف نے کہا کہ بڈگام – بارہمولہ ٹرین سروس فی الوقت بند ہی رہے گی۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*وزیر اعظم نریندر مودی  نے ڈاکٹر ڈے پر کیا خطاب، بولے، کورونا سے جنگ میں ڈاکٹروں نے بچائی لوگوں کی جان*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق  وزیر اعظم نریندر مودی  جمعرات کو ڈاکٹروں کے قومی دن   کے موقع پر طبی دنیا کے لوگوں سے خطاب کیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ڈاکٹروں کو بھگوان کا دوسرا روپ دیا جاتا ہے ، تو ایسے ہی انہیں یہ نہیں کہا جاتا ہے۔ کتنے لوگ ہوں گے جن کی زندگی خطرے میں پڑی ہو گی، کسی بیماری یا حادثے کا شکار ہوا ہوگا ، یا پھر کئی بار ہمیں ایسا لگتا ہے کہ ہم اپنا کوئی کھو بیٹھیں گے۔ اس موقع پر ، پی ایم مودی نے اپنے خطاب میں کہا کہ 130 کروڑ ہندوستانیوں کی طرف سے ، میں ملک کے تمام ڈاکٹروں سے اظہار تشکر کرتا ہوں۔مودی نے کہا کہ یہ نیک کام کرتے ہوئے ملک کے بہت سارے ڈاکٹروں نے اپنی جان بھی دے دی ہے۔ میں ان کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں ، ان کے اہل خانہ سے اظہار تعزیت پیش کرتا ہوں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ آج جب ملک کورونا وائرس کے خلاف اتنی بڑی جنگ لڑ رہا ہے ، ڈاکٹروں نے دن رات محنت کرکے لاکھوں جانیں بچائیں۔ انہوں نے کہا کہ اس سال  کے لئے بجٹ کی مختص دوگنی سے زیادہ یعنی دو لاکھ کروڑ روپے سے زیادہ کیا گیا۔
•••••••••••••••••••••••••••••••••
*ملک میں کرونا کیسز میں لگاتار آرہی ہے کمی،6 لاکھ سے کم ایکٹیو کیسز*
واضح ہوکہ نیوز رپورٹ سے ملی جانکاری کے مطابق ملک میں کرونا وائرس کے نۓ کیسز میں کمی دیکھنے کو مل رہی ہے ، کویڈ ١٩ انڈیا ویب سائٹ کے مطابق یکم جولائی بروز جمعرات کی رات بارہ بجے سے قبل اپڈٹ  رپورٹ کے مطابق ملک میں ایک دن میں کل 43,169 نۓ کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جس کے بعد کرونا متاثرین کی مجموعی تعداد 3,04,53,937 پہونچ گئ ہے جبکہ ایک دن میں 782 لوگوں کی موت کے بعد اموات کی مجموعی تعداد 4,00,271 پہونچ گئ ہے ، اب تک کل 2,95,36,087 افراد شفایاب ہوچکے ہیں اس وقت 5,05,623 ایکٹیو کیسز ہیں
(بشکریہ اے بی ڊی نیوز۔)

Post Top Ad

Your Ad Spot