Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Wednesday, November 24, 2021

جیل میں شرجیل امام کے 666 دن*



از / سمیع اللہ خان/ صدائے وقت 
==================================
شرجیل امام کی تقریر سے کوئی ایک بھی شخص نہ تو زخمی ہوا نا ہی ہلاک ہوا، لیکن ایک مسلّح پولیس ٹیم اسے گرفتار کرنے کے لیے مستعدی کے ساتھ حرکت میں تھی اور گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیا گیا اور اب شرجیل امام کو جیل میں 666 دن گزر چکے ہیں 
 دوسری طرف دہلی میں تو، کپل مشرا، انوراگ ٹھاکر، یوگی اور گری راج سنگھ جیسے بھاجپائی لیڈروں نے باقاعدہ دنگا کروایا، لیکن انہیں گرفتار کرنا تو درکنار، یہ فسادی مجرموں کا ٹولہ پولیس کی حفاظت میں آزاد ہے، اور ان مسلم۔کش فسادات کا الزام شرجیل امام، خالد سیفی، عمر خالد، میران حیدر اور گلفشاں جیسے مسلمانوں پر عائد کرکے انہیں زندان میں آزمایا جارہاہے، این آر سی اور CAA جیسے مسلم دشمن ظالمانہ قوانین کےخلاف جن بہادروں نے مسلمانوں کی لڑائی لڑی وہ جیلوں میں اپنی زندگیاں رگڑ رہے ہیں انہیں امیت شاہ، مودی اور آر ایس ایس کی ظالمانہ ہندوتوا نفسیات کو راحت پہنچانے کے لیے جیلوں میں رکھا گیا ہے، لیکن وہیں مسلمانوں اور ان کی قیادتوں نے ملت کے ان جانباز قیدیوں کے لیے کیا کیا؟ سرچ کیجیے، کبھی آپ نے کسی مرکزی مسلم اسٹیج پر شرجیل امام کا نام سنا؟ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے بچوں کےمتعلق کچھ سنا؟ پھر سوچیے گا ضرور کہ آپ کہاں کھڑے ہیں؟ ہم میں سے کتنے لوگ انہیں یاد کرتےہیں؟ ان کے خاندانوں کی خبرگیری کرتےہیں انہیں ملت کی اپنائیت محسوس کراتے ہیں؟ جو لوگ سال دو سال میں ہی اپنے بہادروں اور محسنوں کو فراموش کردیتے ہوں ان کے حالات بھلا کیوں تبدیل ہونے لگیں؟ سوچیے گا… 
 سوچنے سمجھنے سے تقدس کے پردوں پر ضربیں پڑنے لگیں اور لڑائی کے خوف سے کپکپی طاری ہونے لگے تو بیلنس کرنے کے لیے زور زور سے پکاریے گا "ہندوستان دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہے" اس نسخے سے باقی سب ٹھیک ہوجائے گا_

*#سمیع_اللّٰہ_خان* 
ksamikhann@gmail.com

Post Top Ad

Your Ad Spot