Sada E Waqt

چیف ایڈیٹر۔۔۔۔ڈاکٹر شرف الدین اعظمی۔۔ ایڈیٹر۔۔۔۔۔۔ مولانا سراج ہاشمی۔

Breaking

متفرق

Thursday, April 14, 2022

آمریت کی طرف بڑھتے قدم....


از/ مفتی محمد ثناء الہدیٰ قاسمی نائب ناظم امارت شرعیہ بہار اڈیشہ وجھارکھند پھلواری شریف پٹنہ. 
                          صدائے وقت 
================================
 وی ڈیم انسٹی ٹیوٹ (ویرائٹینر آف ڈیموکریسی) دنیا بھر میں جمہوری صورت حال کا جائزہ لینے اور اسے عام کرنے کا کام کرتی ہے، اس کی حالیہ رپورٹ اسی مہینہ کے اوائل میں سامنے آئی ہے ، جس کے مطابق ہندوستان سر فہرست ان دس ملکوں میں شامل ہے جہاں مطلق العنان حکومت ہے، ہندوستان کے علاوہ اس فہرست میں ای سلواڈور ترکی اور ہنگری کا نام بھی شامل ۔ تجزیہ نگار کے خیال ہے کہ آئندہ دنوں میں ان ملکوں میں جمہوریت کی صورت حال مزید خراب ہوگی، اس کے قبل دی وائر نے اپنے رپورٹ میں ہندوستان کو ان ملکوں کے ساتھ رکھا تھا،جس میں انتخابی تانا شاہی عروج پر ہے ، سویڈش انسٹی چیوٹ نے ۲۰۲۲ء میں جمہوریت سے متعلق اپنی ایک رپورٹ آٹو کر یٹائزیشن چیلنجنگ نیچر میں بتیس (۳۲) ممالک میں تاناشاہی کی نشان دہی کی ہے ، جس میں ہندوستان بھی شامل ہے، اس رپورٹ میں پندرہ(۱۵) ایسے ممالک کا بھی ذکر کیا گیا ہے جہاں جمہوریت کی لہر دیکھنے کو مل رہی ہے ، اس رپورٹ کے مطابق افغانستان، بنگلہ دیش کمبوڈیا، ہانگ کانگ ، تھائی لینڈ، فلپائن، برازیل ، پولینڈ، سربیا اور ترکی بھی تاناشاہی میں ہندوستان کے قدم بقدم چل رہے ہیں، ان رپورٹوں میں ہندوستان میں آمریت اور تانا شاہی کی وجہ ہندو قوم پرست ایجنڈے کے نفاذ کو قرار دیا گیا ہے ، جمہوریت کی حالت اعداد وشمار کے اعتبار سے دیکھیں تو ۲۰۱۳ء کے مقابلے ۲۰۲۰ء میں ۲۳ء ۰ کی گراوٹ درج کی گئی، ۲۰۱۲ء میں ہندوستان میں جمہوریت کی سطح عروج پر تھی اور اس کا گراف ۵۷ء ۰ تھا، گذشتہ دس سالوں کا جائزہ لیں تو یہ سب سے بڑی گراوٹ ہے، اس سے معلوم ہوتا ہے کہ ہندوستان تیزی سے آمریت کی طرف بڑھ رہا ہے اور جمہوری اقدار دن بدن گھنٹے جا رہے ہیں۔

Post Top Ad

Your Ad Spot